26 ستمبر 2018
تازہ ترین
چہل قدمی وزن کم کرنے میں موثر

اگر آپ وزن کم کرنے کا ارادہ بالکل ابتدا سے کر رہے ہیں تو اس کا مطلب ہے کہ آپ نے کبھی مستقل مزاجی سے ورزش نہیں کی۔ نئی فٹنس روٹین کا خیال آپ کو ورزش سے بددل کر سکتا ہے لیکن یہ اس بات کی یقین دہانی کراتا ہے کہ  آپ کو کسی میریتھن میں بھاگنے کی ضرورت نہیں۔ اس کی شروعات محض چہل قدمی سے بھی کی جاسکتی ہے۔ امریکن کالج آف سپورٹس میڈیسن کے مطابق  ایک عام انسان کو وزن کم کرنے کیلئے ہر ہفتے تقریباً چار گھنٹے کی معمولی شدت کی ایروبک ورزش کی ضرورت ہوتی ہے۔ تاہم  اگر آپ چہل قدمی کے نتیجے میں موثر نتائج چاہتے ہیں تو کچھ اہم باتوں کو ذہن میں رکھیں۔ ایک سند یافتہ فٹنس ٹرینر اےٹونڈرا ونشیل  نے کہا ہے کہ  چہل قدمی کرنا وزن کم کرنے کیلئے محفوظ اور موثر ترین عمل ہے۔ جہاں تک اس کی شدت کا سوال ہے، یہ ضروری ہے کہ بطور ایک فرد ، معمولی شدت آپ کیلئے کیا معنی رکھتی ہے۔ کیونکہ یہ چیز ہر فرد کیلئے برابر نہیں ہوتی۔ ونشیل نے کہا کہ وزن کم کرنے کیلئے چہل قدمی کو موثر عمل بنانے کیلئے اس بات کو یقینی بنائیں کہ جب آپ چلیں تو آپ کا تھوڑا سانس پھولے۔ اس کا مطلب ہوگا کہ آپ کو آرام سے نہیں بلکہ قوت کے ساتھ چلنا ہے۔ قوت کے ساتھ چلنا ایروبک اور این ایروبک ورزش کیلئے بہترین ہے، کیونکہ یہ بیک وقت کئی مسلز کو مصروف رکھتا ہے۔  تاہم یہ سمجھنا ضروری ہے کہ مستقل مزاحمتی  ٹریننگ کے بغیر نتائج کے سامنے آنے میں بہت وقت درکار ہوگا۔ انہوں  نے کہا کہ جب آپ کا سانس پھولا ہوا ہوتا ہے، یہ وہ وقت ہوتا ہے جب چہل قدمی  آپ کیلئے موثر ہو پاتی ہے۔ ونشیل نے کہا کہ اگر آپ نئے ورزش کرنے والے ہیں یا ایک طویل عرصے بعد دوبارہ ورزش کر رہے ہیں تو عین ممکن ہے کہ شروع میں نتائج آپ کے سامنے تیزی کے ساتھ آئیں لیکن  تقریباً چھ ساتھ ہفتوں بعد آپ کوئی تبدیلی محسوس نہیں کریں گے۔ انہوں نے مزید کہا کہ آپ کے طریقہ کار میں کوئی غلطی نہیں ہوگی لیکن آپ کو اپنے مطلوبہ نتائج کی اقسام  اور ان نتائج تک پہنچنے کیلئے درکار وقت کیلئے حقیقت پسندانہ رویہ رکھنا ہوگا۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟