22 فروری 2019
تازہ ترین
 پی سی بی کا براڈ کاسٹر سے تنازع شدت اختیار کر گیا

 پی سی بی اور براڈ کاسٹر ادارے میں مالی امور پر تنازع شدت اختیار کرنے لگا۔ گزشتہ برس اپریل میں کیریبیئن کرکٹ ٹیم نے 3 ٹوینٹی 20 میچز کھیلنے کیلئے پاکستان کا دورہ کیا تھا، چونکہ یہ سیریز فیوچر ٹور پروگرام کا حصہ نہیں تھی، اس لئے کرکٹ بورڈ نے براڈ کاسٹر سے تین ملین ڈالر فیس طلب کی۔ اس کا جواب تھا کہ اسے بھی معاہدے میں ہی شامل ہونا چاہئے لہٰذا اضافی ادائیگی کا جواز نہیں بنتا، اب 10 ماہ گزرنے کے باوجود یہ رقم بورڈ کو نہیں مل سکی ، سابق چیئرمین نجم سیٹھی مستعفی ہونے سے قبل اس کی انوائس جاری کرا گئے تھے اس لئے معاملہ اب ختم نہیں کیا جا سکتا۔  لاہور میں پی سی بی گورننگ بورڈ کے سامنے بھی یہ تفصیلات رکھی گئیں، اس موقع پر فیصلہ ہوا کہ یہ کیس لیگل ڈپارٹمنٹ کو بھیجا جائے گا جو آپشنز دیکھ کر کوئی قدم اٹھائے گا۔ واضح  رہے کہ اپریل میں منعقدہ سیریز میں ویسٹ انڈیز کے کئی سٹار کھلاڑی سیکیورٹی خدشات کی وجہ سے شریک نہیں ہوئے تھے، پی سی بی نے منہ مانگا معاوضہ دے کر مہمان ٹیم کو دورے پر بلایا تھا، اس کا مقصد ملک میں انٹرنیشنل کرکٹ کی واپسی تھی، کراچی کے نیشنل سٹیڈیم میں منعقدہ تینوں میچز پاکستان نے باآسانی جیت لئے تھے، میچز کے دوران بہترین سیکیورٹی انتظامات سے دنیا پر پاکستان کا اچھا تاثر گیا، البتہ کمزور مہمان ٹیم کے سبب براڈ کاسٹر کیلئے مالی طور پر یہ سیریز منافع بخش نہیں رہی تھی۔ ذرائع کے مطابق پی سی بی اس آپشن پر بھی غور کر رہا ہے کہ یہ رقم معاف یا کسی طرح ایڈجسٹ کر دی جائے، البتہ حتمی فیصلہ لیگل ٹیم سے مشاورت کے بعد ہی کیا جائے گا۔  


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟