22 نومبر 2018
تازہ ترین
پی ایس او   واجبات  330.7 ارب سے متجاوز  

 نگران دور حکومت میں بھی پاکستان  سٹیٹ آئل کو ادائیگیوں میں بہتری نہ آسکی اور پی ایس او کے مختلف اداروں کے ذمے واجبات 3 کھرب 30ارب 70کروڑ روپے سے تجاوز کرگئے ۔ پی ایس او کے نادہندگان میں پاور سیکٹر بدستور سرفہرست ہے ، جسے پی ایس او کو 280ارب روپے ادا کرنے ہیں، بجلی کی پیداواری کمپنیوں  جنکوز  کی جانب سے تیل کی بروقت ادائیگیاں نہ کرنے سے واجبات 157ارب روپے تک پہنچ گئے ہیں، حب پاور کمپنی نے 76ارب 90کروڑ اور کوٹ ادو پاور کمپنی کو 44ارب 70کروڑ روپے سے زائد ادا کرنے ہیں، پی آئی اے کے ذمے 16 ارب50کروڑ اور پرائس ڈیفرنشنل کلیمز کی مد میں 9ارب 60 کروڑ کے ساتھ سوئی ناردرن گیس کمپنی لمیٹڈ پر 24ارب 40کروڑ واجب الادا ہیں۔  پاکستان سٹیٹ آئل نے مختلف ملکی و غیرملکی آئل ریفائنریوں کو 137ارب روپے سے زائد ادا کرنے ہیں، پاک ارب ریفائنری کو 8ارب 60کروڑ، پاکستان ریفائنری لمیٹڈ 2ارب 90کروڑ، نیشنل ریفائنری لمیٹڈ1ارب 20کروڑ ، بائیکو1ارب 60 کروڑ، اینار1 ارب روپے، اٹک ریفائنری لمیٹڈ 2ارب 80کروڑ اور پی ایس او کو  کے پی سی ایس بی ایل سی اور ایل این جی کی مد میں 119 ارب روپے ادا کرنے ہیں۔  


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟