25 جون 2019
تازہ ترین
 پستہ ذیابطیس کے مریضوں کیلئے مفید

 پستہ ذیابطیس کے مریضوں کیلئے مفید

ذیابطیس ایک ایسا مرض ہے، جس کے مریض اسی پریشانی کا شکار رہتے ہیں کہ کون سی غذائیں کھائیں اور کون سی نہیں۔ ذیابطیس کے مریضوں کے لئے میوہ جات کے استعمال پر طبی ماہرین کی رائے مختلف نظر آتی ہے۔  کینیڈا کی ٹورنٹو یونیورسٹی کے ریسرچرز کی ایک تحقیق کے مطابق خشک میوہ جات سے مراد صرف سخت چھلکوں والے گری دار میوے ہیں ۔ ان میں وہ پھل شامل نہیں ہیں، جن کو خشک کر کے استعمال کیا جاتا ہے۔ تحقیق کاروں نے کہا ہے کہ سخت چھلکوں والے گری دار میووں سے خاص طور پر ذیابیطس کا کنٹرول موثر ہے۔ بادام ایک غذائیت سے بھرپور غذا ہے جو وٹامن ،پروٹین اور منرلز سے بھرپور ہوتی ہے۔ طبی ماہرین بادام کو ایک ایسا میوہ کہتے ہیں، جسے ذیابطیس کے مریض بغیر کسی پریشانی کے استعمال کر سکتے ہیں۔ امریکن یونیورسٹی کے تحقیق کا روں کے مطابق بادام کا استعمال ذیابطیس کنٹرول کرنے اور کولیسٹرول کی سطح برقرار رکھنے میں مددگار ثابت ہوتا ہے۔ ایک تحقیق میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ کھانے کے بعد بادام استعمال کرنے سے جسم میں گلوکوز اور انسولین کی سطح قابو میں رہتی ہے۔ طبی ماہرین اخروٹ کو میگنیشیم، فائبر ،اومیگا تھری فیٹی ایسڈاور لائنولینک ایسڈسے بھرپور غذا تسلیم کرتے ہیں۔  اخروٹ میں وٹامن ای، فولک ایسڈ، زنک اور پروٹین وغیرہ بھی شامل ہیں، جو بھوک کم کرنے کے ساتھ کم کیلیوریز کے ساتھ جسمانی توانائی بھی بڑھاتے ہیں جبکہ فائبر اور پروٹین بھوک کی اشتہا ختم کرنے اور بلڈ شوگر لیول کنٹرول کرنے میں مدد فراہم کرتے ہیں۔ ماہرین کے مطابق وہ تمام افراد جو اخروٹ کا استعمال روزانہ کرتے ہیں ان میں انسولین کا لیول متوازن رہتا ہے۔ طبی ماہرین ذیابطیس کے مریضوں کے لئے پستے کے استعمال کو بھی مفید تصور کرتے ہیں۔ ان کے مطابق پستہ انسولین اور گلوکوز کی کارکردگی کو بہتر بنا تا ہے۔ سپین کے طبی ماہرین ایک تحقیق کے بعد اس نتیجے پر پہنچے ہیں کہ پستے کو روزانہ کی خوارک میں شامل کرنا ذیابطیس سمیت کئی امراض میں انتہائی مفید ہے۔ نوٹ :یہ مضمون قارئین کی معلومات میں اضافے کے لئے ہے ذیابطیس کے مریض ان خشک میوہ جات کے استعمال سے قبل اپنے معالج سے بھی ضرور مشورہ کریں۔


مزید خبریں

عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟