21 ستمبر 2018
تازہ ترین
پاک بھارت ڈی جی ایم اوز کا رابطہ، بھارتی خلاف ورزیوں پر تشویش

 پاک بھارت ڈی جی ملٹری آپریشنز  کا ہاٹ لائن پر رابطہ ہوا، جس کے دوران ایک دوسرے کو یوم آزادی کی مبارکباد دینے کے ساتھ ساتھ لائن آف کنٹرول اور ورکنگ بائونڈری پر جنگ بندی کے معاملات پر اظہار خیال کیا گیا۔ پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کی جانب سے جاری کیے گئے بیان کے مطابق پاکستان نے ایل او سی اور ورکنگ بائونڈری پر بھارتی خلاف ورزیوں پر تشویش کا اظہار کیا، جو امن کے لیے خطرہ ہے۔ آئی ایس پی آر کے مطابق رواں برس 29 مئی کے بعد سے بھارتی اشتعال انگیزی کے نتیجے میں 4 افراد شہید اور 32 زخمی ہوئے۔ دوسری جانب پاکستان کی جانب سے ایل او سی پر بھارتی فورسز اور ہتھیاروں کی نقل حرکت پر بھی اظہارِ تشویش کیا گیا۔ آئی ایس پی آر کے بیان کے مطابق پاکستان کے ڈی جی ایم او نے ہاٹ لائن رابطے کے دوران انتباہ کیا کہ بھارت ایل او سی پر کسی بھی قسم کی اشتعال انگیزی سے گریز کرے، جس پر بھارتی ڈی جی ایم او نے حالات خراب کرنے والے اقدام سے گریز کی یقین دہانی کروائی۔ ہاٹ لائن رابطے کے دوران پاکستانی ڈی جی ایم او نے ایل او سی پر دراندازی کا بھارتی الزام مسترد کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کی جانب سے ایل او سی پر موثر اقدامات کیے گئے ہیں۔ آئی ایس پی آر کے مطابق پاکستانی ڈی جی ایم او کا کہنا تھا کہ پاکستانی فورسز نے ایسی کوئی نقل و حرکت نہیں دیکھی، اگر ایسی کوئی قابل  عمل خفیہ اطلاع ہے تو تحقیقات کے لیے شیئر کی جائے۔ آئی ایس پی آر کے مطابق پاکستانی ڈی جی ایم او نے امن کی خواہش کے عزم کا اعادہ کیا، تاہم ان کا کہنا تھا کہ بھارت کی جانب سے جارحیت کے اقدامات جاری رہے تو بھرپور جواب دیا جائے گا۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟