21 ستمبر 2018
تازہ ترین
پاکستان  کا گستاخانہ مواد پر او آئی سی کا ہنگامی اجلاس طلب کرنیکا مطالبہ

پاکستان نے گستاخانہ مواد پر او آئی سی کا ہنگامی اجلاس طلب کرنے کا مطالبہ کر دیا۔وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ انہوں نے او آئی سی کے سیکرٹری جنرل کو اس حوالے سے خط لکھ دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس حوالے سے او آئی سی کو فوری اجلاس بلایا جائے تاکہ تنازع پر او آئی سی کا موقف سامنے آسکے۔انہوں نے کہا کہ ہمارا او آئی سی کے 6 اراکین سے رابطہ ہوچکا ہے جن سے ہم نے تنازع پر بات کی ہے۔ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ نیوز کانفرنس سے خطاب سے کچھ دیر قبل ترکی کے وزیر خارجہ سے بھی اس معاملے پر بات ہوئی۔

علاوہ ازیں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے وزیراعظم عمران خان اور امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو کی ٹیلی فونک گفتگو سے متعلق امریکی محکمہ خارجہ کی پریس ریلیز حقائق کے برعکس قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اگر امریکا بیان پر قائم ہے تو ہم بھی اپنی بات پر قائم ہیں۔  وفاقی وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے ایوان میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا پاکستان کی خارجہ پالیسی مرتب کرنے میں پارلیمنٹ سے رہنمائی حاصل کروں گا، مجھے اس ایوان کے تاثرات کا علم ہونا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں پارٹی سے بالاتر ہو کر خارجہ پالیسی کو دیکھنا ہو گا، ہماری نیشنل پالیسی، سیکیورٹی پالیسی سب آپس میں مشترک ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کی امریکی وزیر خارجہ سے گفتگو پر امریکی بیان حقیقت سے برعکس ہے، امریکی پریس ریلیز میں جو بتایا گیا وہ حقیقت کے برعکس ہے، فون پر جو رابطہ ہوا وہ اچھی اور تعمیری گفتگو تھی۔ انہوں نے کہا کہ غلطیاں ہو جاتی ہیں، پریس ریلیز میں غلطی ہوئی ہو گی، امریکی وزیر خارجہ کے دورے کے دوران تعلقات میں بہتری کی بات ہو گی۔ انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان اور امریکہ کے درمیان تعلقات ایک نئے موڑ پر ہیں۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟