20 مارچ 2019
پاکستان ایران کیساتھ آزاد تجارتی معاہدے پر نظر ثانی کرے گا

پاکستان نے ایران کے ساتھ آزاد تجارتی معاہدہ کرنے پر نظر ثانی کا فیصلہ کیا ہے، دونوں ممالک کے درمیان بنکاری کے شعبے کوئی نظام نہ ہونے سے تجارتی معاہدے میں کوئی پیش رفت نہیں ہوئی ہے۔ وزارت تجارت کے ذرائع کے مطابق پاکستان اور ایران کے درمیان آزاد تجارتی معاہدہ کھٹائی کا شکار ہو گیا ہے۔ دونوں ممالک کے درمیان بنکاری کے شعبے میں عدم تعاون اور امریکی پابندیاں معاہدے کی راہ میں بڑی رکاوٹ ہیں۔ ذرائع کے مطابق دسمبر 2016ئ میں دونوں ممالک کے درمیان ایف ٹی اے کے حوالے سے مذاکرات شروع کئے گئے تھے تاہم ابھی تک اس حوالے سے کوئی پیش رفت نہیں ہو سکی ہے۔  پابندیوں کی وجہ سے مستقبل قریب میں تجارتی معاہدے کا کوئی امکان نظر نہیں آ رہا۔ دونوں ممالک کے درمیان تجارتی معاہدہ نہ ہونے سے دو طرفہ تجارت میں اضافے کے امکانات معدوم ہو گئے ہیں۔ مجوزہ آزاد تجارتی معاہدے کے تحت 80 فیصد مصنوعات پر ڈیوٹیز میں رعایت دینے پر اتفاق کیا گیا تھا، دونوں ممالک کے درمیان سالانہ دو طرفہ تجارت 27 کروڑ ڈالر ہے۔  


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟