13 نومبر 2018
تازہ ترین
پاکستان  اب کبھی کسی کی جنگ میں شرکت نہیں کرے گا،وزیراعظم

وزیراعظم عمران خان نے جی ایچ کیو میں یوم دفاع، شہدا کی تقریب میں خطاب سے قبل آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کے ہمراہ یاد گار شہدائ پر پھولوں کی چادر چڑھائی اور فاتحہ خوانہ کی۔ بعد ازاں یوم دفاع کی مرکزی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ شہدا کی قربانیوں کو سلام پیش کرتا ہوں،میں 6ستمبر1965کو 12سال کا تھا ، والد کی بندوق لیکر پہنچ گیا، رشتے دوروں نے واپس بھیج دیا کہ تم ابھی بہت چھوٹے ہو، زمان ٹائون مین شیلنگ اور دھماکوں کی آواز کبھی نہیں بھول سکتا، بھارتی پیرا ٹروپرز کی لاہور میں اترنے کی خبریں سنیں ، اگلے روز معلوم ہوا کہ بھارتی پیراٹروپرز تو نہیں آئے مگر میرے کنز نے ایک رشتہ دار پر گولیاں چلا دیں تاہم ان کے نشانے برے تھے اس لئے خوش قسمتی سے وہ رشتہ دار بچ گیا۔ پاکستان میں اس وقت جو ایک لہر تھی کہ ساری قوم فوج کیساتھ کھڑی تھی، وہ جذبہ آج تک نہیں دیکھا۔ جنگ کے دن اپنے والدین کے چہروں پر خوف دیکھا، اگر کرکٹ نہ کھیلتا تو آج ایک ریٹائرڈ فوجی ہوتا۔ انہوں نے کہا کہ میرا قوم سے وعدہ ہے کہ پاکستان کبھی کسی کی جنگ میں شرکت نہیں کرے گا اور ہماری خارجہ پالیسی بھی پاکستان کی بہتری کے لیے ہو گی۔ وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں شرکت کے خلاف تھا لیکن جس طرح سے پاکستان نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں کامیابیاں حاصل کیں دنیا میں کسی بھی فوج نے اس طرح کی کامیابیاں حاصل نہیں کیں۔ ان کا کہنا تھا کہ ملک میں اس وقت ایک ادارہ ہے جو کام کر رہا ہے، فوج ایسا ادارہ ہے جہاں میرٹ کا نظام ہے، ہمیں اپنے ادارے مضبوط کرنے ہیں۔ وزیراعظم پاکستان عمران خان نے کہا ہے کہ پاکستان کبھی کسی اور کی جنگ میں شریک نہیں ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ 6 ستمبر 1965 کو پاکستان میں جو جذبہ دیکھا وہ دوبارہ نظر نہیں آیا، میں کرکٹ کی طرف نہ جاتا تو شاید میں بھی ریٹائرڈ فوجی ہوتا۔ عمران خان نے کہا کہ پاک فوج ایک مضبوط ادارہ ہے جس میں ڈسپلن اور میرٹ ہے، ایک دور میں سول سروس بھی اسی طرح ایک مضبوط ادارہ تھا، پاکستان کے دیگر اداروں کو بہتر بنانا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ جب ریاست کمزور کو طاقتور کے خلاف تحفظ فراہم کرے گی اس وقت تمام لوگ ریاست سے وفادار ہوں گے، جب غریب آدمی کو تعلیم اور صحت کی سہولتیں ملیں گی تو وہ قوم کس حصہ بن جائے گا۔ وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان میں کوئی سول ملٹری کشمکش نہیں ہے، پاکستان ہم سب کا ہے، پاک فوج ایک ادارہ ہے، ہم باقی اداروں کو بھی ترقی دیں گے۔ شہدائ کے لواحقین سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ آپ سب کو یہ یاد رکھنا چاہیے کہ جن لوگوں نے ہمارے لیے جان دی ہے ان کا درجہ بہت بلند ہے۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟