18 نومبر 2018
تازہ ترین
وفاقی کابینہ کی ضابطہ فوجداری ،نیب قوانین میں تبدیلی کیلئے ٹاسک فورس بنانے کی منظوری

وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس منعقد ہوا جس میں کئی اہم فیصلے کیے گئے۔ وفاقی کابینہ نے چیئرمین نیشنل بینک سعید احمد خان کو عہدے سے ہٹانے کی منظوری دے دی ہے۔وزیراعظم ہائوس میں وفاقی کابینہ کا ہونے والا یہ تیسرا اجلاس تھا جس میں 9 نکاتی ایجنڈے پر غور کیا گیا۔ ذرائع کے مطابق وفاقی کابینہ کے اجلاس میں مجموعہ ضابطہ فوجداری میں اصلاحات کیلئے ٹاسک فورس بنانے کی منظوری دی گئی۔ اجلاس میں سول لا ریفارمز اور نیب کے قوانین میں بڑی تبدیلیوں کیلیے بھی ٹاسک فورس بنانے کی منظوری دی گئی۔ وفاقی کابینہ نے سول سروس ریفارمز اور وفاقی حکومت کے عہدوں کی تنظیم نو، وفاقی وزارتوں، محکموں اور ڈویژنز کے اخراجات میں کمی کا جامع مکینزم بنانے، سادگی اور اخراجات میں کمی کے لیے ٹاسک فورس بنانے، 100 روزہ پلان پر عمل درآمد سے متعلق جامع نظام بنانے کی منظوری دی گئی۔ ذرائع کے مطابق وزارت صحت کی اصلاحات سے متعلق سفارشات کی تیاری کیلئے بھی ٹاسک فورس قائم کی گئی ہے جبکہ ملک بھر میں مون سون شجرکاری مہم کے حوالے سے تفصیلی رپورٹ پیش کی گئی۔  ذرائع کے مطابق وفاقی کابینہ نے فوری طور پر شجرکاری مہم شروع کرنے کا فیصلہ کیا۔ ذرائع کے مطابق وفاقی کابینہ نے وفاقی حکومت کے سینئر افسران کی تبادلوں کی توثیق بھی کی۔ یاد رہے کہ وفاقی کابینہ اپنے پہلے اجلاس میں سابق وزیراعظم نواز شریف اور ان کی صاحبزادی مریم نواز کا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ  ای سی ایل میں ڈالنے کی منظوری دے چکی ہے۔ اسی طرح وفاقی کابینہ کے 24 اگست کو ہونے والے دوسرے اجلاس کے دوران  صدر، وزیراعظم، وزرا اور ارکان پارلیمنٹ کے صوابدیدی فنڈز ختم کرنے کی منظوری دی گئی۔ کابینہ کے اجلاس میں دفتری کام کے اوقات کار تبدیل کرنے کی بھی منظوری دی گئی تھی، کام کے اوقات کار صبح 9 بجے سے شام 5 بجے تک ہوں گے جب کہ کابینہ کے بیشتر ارکان نے ہفتے کی چھٹی فی الحال ختم کرنے کی مخالفت کی جس کے بعد ہفتے کی چھٹی فی الحال ختم نہ کرنے کی منظوری دی گئی

وفاقی کابینہ کے اجلاس میں مہر خالق داد لک کو نیشنل کوآرڈینیٹر نیکٹا، محمد جہانزیب کو چیئرمین ایف بی آر جبکہ محمد سلیمان خان کو ڈی جی آئی بی مقرر کر دیا گیا ہے۔ وزیرِ اعظم عمران خان کے زیر صدارت وفاقی کابینہ کے اجلاس میں اہم فیصلے سامنے آئے ہیں۔ نجی ٹی وی ذرائع کے مطابق محمد سلیمان خان کو ڈی جی آئی بی مقرر کر دیا گیا ہے۔ ان کے علاوہ محمد جہانزیب کو چیئرمین ایف بی آر جبکہ مہر خالق دادلک کو نیشنل کوآرڈینیٹر نیکٹا تعینات کر دیا گیا ہے۔ خیال رہے کہ گزشتہ روز اسٹیبلشمنٹ ڈویژن نے کوآرڈینیٹر نیکٹا ڈاکٹر سلمان خان کو ڈائریکٹر جنرل انٹیلی جنس بیورو اور ڈائریکٹر جنرل نیشنل پولیس اکیڈمی مہر خالق داد لک کو کوآرڈینیٹر نیکٹا تعینات کرنے کیلئے سمری وزیرِاعظم کو بھجوائی تھی۔ سابق حکومت نے ڈاکٹر سلمان خان کو اپریل 2018 میں ڈائریکٹر جنرل آئی بی تعینات کیا تھا، تاہم نگران حکومت کے تبادلوں کے بعد 2 جولائی سے نیکٹا میں تعینات ہیں۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟