وزیراعلیٰ  خیبر پختونخوا کے معاون خصوصی کا عہدہ لینے سے انکار

 وزیر اعلیٰ  خیبر پختونخوا کے معاون خصوصی برائے ٹرانسپورٹ شاہ محمد نے  عہدہ لینے سے انکار کر دیا۔ نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے شاہ محمد نے کہا کہ معاون خصوصی کا عہدہ دینا میرے ساتھ نا انصافی ہے،  گزشتہ 5 سال بھی  مشیر برائے ٹرانسپورٹ رہا،  گزشتہ دور میں محنت سے کام کیا، کسی قسم کی بدعنوانی کا کوئی الزام نہیں لگا، تجربے کے باوجود مجھے پھر مشیر لگا دیا گیا،   میرے بعد پارٹی جوائن کرنے والے نا تجربہ کار لوگوں کو وزیر لگا دیا گیا،  میں نے پارٹی سے ہر قسم کا عہدہ لینے سے انکار کر دیا ہے، ایم پی اے ہوں  جو عوام کی امانت ہے، انہوں نے کہا کہ جنوبی اضلاع کے حصے میں صرف مشیر کا عہدہ آیا ہے عمران خان کو وہاں سے جتوایا جہاں پی ٹی آئی کا نام و نشان بھی نہیں تھا، پارٹی سے دیرینہ وابستگی کا صلہ یہ دیا گیا ہے،  اگر یہ تبدیلی ہے تو ہمیں ایسی تبدیلی نہیں چاہیے،  پی ٹی آئی میں امتیازی سلوک کی انتہا دیکھ رہا ہوں،  انہوں نے کہا کہ  وزیراعظم عمران خان  کے کابینہ سے متعلق تمام فیصلے  میرٹ  پر نہیں ہیں، کابینہ تشکیل میں  صوبے کے جنوبی اضلاع اور فاٹا سے زیادتی کی گئی، قومی اور صوبائی اسپیکرز اور تمام وزارتوں میں جنوبی اضلاع کو نظر انداز کیا گیا۔

 


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟