25 ستمبر 2018
تازہ ترین
وزیراعظم  سے آرمی چیف کی  ملاقات، قومی سلامتی امور پر تبادلہ خیال

 وزیراعظم عمران خان سے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے ملاقات کی جس میں قومی سلامتی امور پر تبادلہ خیال کیا گیا جبکہ سرحدوں اور خطے کی سیکیورٹی صورتحال پر بھی بات چیت کی گئی۔دونوں رہنمائوں نے قومی سلامتی امور، سرحدوں اور خطے کی صورتحال سمیت اہم معاملات پر تبادلہ خیالات کیا، آرمی چیف نے وزیرِاعظم کو دہشت گردی کے خلاف جاری آپریشنز پر بریفنگ بھی دی۔   پاک فوج کے شعبہ تعلقاتِ عامہ کے مطابق وزیرِاعظم عمران کو جی ایچ کیو میں اندرونی و بیرونی سیکیورٹی کی صورتحال، پاک فوج کی دہشتگردی کیخلاف جاری کارروائیاں، آپریشن ردالفساد، کراچی کی صورتحال اور خوشحال بلوچستان پروگرام کے بارے میں بریفنگ دی گئی۔ وفاقی وزرا، خارجہ، دفاع، اطلاعات، خزانہ اور وزیر مملکت برائے داخلہ بھی وزیراعظم عمران خان کے ہمراہ تھے۔ اس موقع پر وزیرِاعظم عمران خان نے پاکستانی فوج کی آپریشنل تیاریوں، پیشہ وارنہ مہارت اور دہشت گردی کے خلاف پاک فوج کی قربانیوں کو سراہا۔ ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کو اندرونی اور بیرونی چیلنجز کا سامنا ہے، مشترکہ قومی سوچ اور قوم کی حمایت سے ہم ان چیلنجز پر کامیابی سے قابو پا لیں گے۔ وزیرِاعظم نے اس امید کا اظہار کیا کہ ترقی پاکستان کا مقدر ہے، ملک بین الاقوامی دنیا میں انشا اللہ مثبت انداز سے ابھرے گا۔ انہوں نے اعلان کیا کہ پاکستان آرمی کی صلاحیتوں اور استعداد کار بڑھانے کے لیے حکومت تمام ذرائع فراہم کرے گی۔ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے وزیرِاعظم عمران خان کے دورے اور فوج پر اعتماد پر ان کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ انشا اللہ پاک فوج قوم کی توقعات پر پورا اترے گی۔ اس سے قبل وزیرِاعظم عمران خان سے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کچھ روز قبل پہلی باضابطہ ملاقات کی جس میں اتفاق کیا گیا کہ خطے میں امن کی کوششوں کو جاری رکھا جائے گا۔ آرمی چیف نے وزیرِاعظم کو دہشتگردوں کے خلاف جاری آپریشنز پر بریف کیا۔ عمران خان نے کہا کہ دہشتگردی کو ختم کرنے کیلئے پاک فوج نے لازوال قربانیاں دیں۔ انہوں نے دہشتگردی کے خلاف جنگ میں پاک فوج کے کردار کو سراہا۔ ملاقات میں پاک فوج کے پیشہ وارانہ امور پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا تھا۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟