23 ستمبر 2018
تازہ ترین
وزیراعظم اور امریکی وزیر خارجہ کی  تنازع گفتگو  پر بات نہیں کرنی،ڈاکٹر فیصل

 ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر فیصل نے وزیراعظم اور امریکی وزیر خارجہ کی گفتگو کے تنازع پر بات کرنے سے گریز کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان اس تنازع کا خاتمہ کرکے سیاسی طور پر آگے بڑھنا چاہتا ہے لہٰذا اس معاملے پر اب مزید بات نہیں کی جائے گی۔  دفتر خارجہ میں ہفتہ وار بریفنگ دیتے ہوئے ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر فیصل نے مقبوضہ کشمیر میں بھارتی بربریت سے آگاہ کیا۔ ترجمان نے بتایا کہ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کا سلسلہ جاری ہے، گزشتہ ہفتے میں بھارتی افواج نے 10 بے گناہ کشمیریوں کو شہید کیا، بھارتی افواج کی جانب سے پیلٹ گنز کے استعمال کی مذمت کرتے ہیں۔ ڈاکٹر فیصل نے حریت رہنمائوں کی غیر قانونی نظر بندی کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ حریت رہنمائوں کی بگڑتی صحت کی صورتحال پر بھی تشویش ہے، عالمی برادی مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزی کا نوٹس لے۔ ترجمان دفتر خارجہ نے لائن آف کنٹرول پر بھارتی جارحیت پر بات کرتے ہوئے کہا کہ ایل او سی اشتعال انگیزی پر شہری کی شہادت پر بھارتی ڈپٹی ہائی کمشنر کو طلب کیا گیا۔ ڈاکٹر فیصل نے ہالینڈ میں گستاخانہ خاکوں سے متعلق بتایا کہ پاکستان نے توہین آمیز خاکوں کے معاملے کا سنجیدہ نوٹس لیا ہے،   او آئی سی کوخط لکھا ہے اور پاکستان میں ہالینڈ کے ناظم الامور کو طلب کرکے شدید احتجاج کیا ہے جب کہ ڈچ سفیر کو ملک بدر کرنے یا کوئی اور ایکشن لینے پر کوئی فیصلہ نہیں ہوا۔او آئی سی اجلاس میں وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی پاکستان کی نمائندگی کریں گے، وہ اجلاس میں توہین آمیز خاکوں کا معاملہ اٹھائیں گے۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟