13 نومبر 2018
تازہ ترین
ن لیگ  صدارتی امیدوار کیلئے یوسف رضا گیلانی کے نام پر رضامند

مسلم لیگ ن  نے مشترکہ صدارتی امیدوار کے لیے یوسف رضا گیلانی کا نام اپوزیشن کے سامنے رکھ دیا تاہم پیپلز پارٹی نے اعتزاز احسن کا نام واپس لینے سے انکار کردیا۔  مشترکہ صدارتی امیدوار کے لیے اپوزیشن جماعتوں کے درمیان اختلاف پایا جاتا ہے جب کہ اپوزیشن اتحاد میں شامل متحدہ مجلس عمل کے صدر مولانا فضل الرحمان نے پیپلز پارٹی کے موقف کی حمایت کی ہے۔  پیپلز پارٹی صدارتی امیدوار کے لیے پہلے ہی اعتزاز احسن کا نام واپس لینے سے انکار کرتے ہوئے مسلم لیگ ن  کا اعتراض مسترد کرچکی ہے۔ ذرائع کے مطابق مولانا فضل الرحمان نے شہباز شریف کو ٹیلیفون کیا اور انہیں صدارتی امیدوار کے حوالے سے پیپلز پارٹی کی قیادت سے ہونے والی ملاقات سے آگاہ کیا۔ ذرائع کے مطابق مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ آصف زرداری نے اعتزاز احسن کا نام واپس لینے سے انکار کردیا جب کہ انہوں نے شہباز شریف کو اپنے موقف میں لچک پیدا کرنے کی درخواست کی۔  مولانا فضل الرحمان نے پیپلز پارٹی کے موقف کی حمایت کی تاہم شہباز شریف نے صدارتی امیدوار کے لیے اپنی پارٹی سے مشاورت کے  لیے وقت مانگ لیا۔ ذرائع کے مطابق مسلم لیگ ن  کو اعتزاز احسن کے بطور صدراتی امیدوار پر تحفظات ہیں تاہم صدارتی امیدوار کے لیے پیپلز پارٹی کے یوسف رضا گیلانی کے نام پر اتفاق کرسکتی ہے۔  اپوزیشن کی جانب سے یوسف رضا گیلانی کے نام پر اتفاق ہوگیا تو  ن لیگ اپنے امیدوار کے نام واپس لے لی گی۔خورشید شاہ نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہمیں ماضی کی تلخیوں کو چھوڑ کر آگے بڑھنا پوگا، ملک کو اعتزاز احسن جیسے چہرے کی ضرورت ہے، امید ہے مسلم لیگ ن اور دیگر جماعتیں ہماری اس بات کو سمجھیں گی۔ پی پی پی رہنما نے کہا ہے کہ اپوزیشن سمجھدار ہے، انشائ اللہ تمام جماعتیں ہمارا ساتھ دیں گی، قومی امید ہے اپوزیشن میں اتحاد و اتفاق قائم رہے گا، ن لیگ کے رہنما بھی سمجھدار ہیں انہیں معلوم ہے کہ ان حالات میں کیا کرنا ہے، ہمارا ہدف ہے کہ اپوزیشن ایسی سیاست کرے جس پر ماضی کا سایہ نہ پڑے، شہباز شریف سلجھے ہوئے سمجھدار اپوزیشن رہنما ہیں ان پر بڑی ذمہ داری ہے۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟