26 ستمبر 2018
تازہ ترین
نرگس کا پھول کینسر کے پھیلائو کوروکنے میں مددگار

بیلجیئم کے ماہرین صحت نے کہا ہے کہ آبی نرگس کے پھولوں میں پائے جانے والے الکلائیڈز پیچیدہ سرطانی رسولیوں کو پھیلنے سے روکتے ہیں۔ بیلجیئم کی یونیورسٹی لایبر ڈی بروکسیلیس (یوایل بی) کے ماہرین کی تحقیق کے مطابق آبی نرگس کے خوبصورت پھولوں میں ہیمانتھیمائننامی ایک الکلائیڈ پایا جاتا ہے جو کینسر کو پھیلنے سے روکتا ہے۔ ماہرین کے مطابق کیسر کے ہر خلیے میں رائبوسوم پائے جاتے ہیں جسے نینومشینز بھی کہا جاتا ہے ۔ سرطانی رسولیاں خود کو بڑھانے کے لئے رائبوسوم کو ہائی جیک کرکے اپنے لئے پروٹین بنانے پر مجبور کر دیتی ہیں۔ ہیمانتھیمائن کو جب کینسر کی رسولیوں پر آزمایا گیا تو اس نے رائبوسوم کو پروٹین بنانے سے باز رکھا اور دوسرے مرحلے میں رسولی کو بڑھنے سے روک دیا ۔ تحقیق اب اس مرحلے میں ہے کہ نرگس سے اخذ کردہ یہ الکلائیڈ کہیں صحت مند خلیات کو نقصان تو نہیں پہنچاتا، اگلے مرحلے میں ماہرین پھول کے مزید چار الکلائیڈز نکال کر ان کی آزمائش کریں گے۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟