22 ستمبر 2018
تازہ ترین
میشا ہراسانی کیس، علی ظفر سے جواب طلب

لاہور ہائی کورٹ نے میشا شفیع کو ہراساں کرنے کے الزام میں گورنر پنجاب کے فیصلے کے خلاف درخواست پر علی ظفر کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کرلیا۔ لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس شاہد کریم نے علی ظفر کی جانب سے مبینہ ہراساں کئے جانے سے متعلق گلوکارہ میشا شفیع کی درخواست پر سماعت کی۔ میشا شفیع کے وکیل بیرسٹر احمد پنسوٹا نے دلائل دیئے  کہ صوبائی محتسب پنجاب نے علی ظفر کے خلاف ہراساں کرنے کی درخواست خارج کی، صوبائی محتسب کے مطابق علی ظفر اور میشا شفیع کے درمیان مالک اور ملازم کا رشتہ نہیں تھا اس لئے اس کیس کی سماعت نہیں ہوسکتی۔ بعد ازاں گلوکارہ میشا شفیع کے وکیل کی جانب سے صوبائی محتسب کے فیصلے کے خلاف گورنر پنجاب کے روبرو اپیل دائر کی گئی لیکن گورنر پنجاب نے اپیل میں اعتراضات کا جائزہ لینے کے بجائے انہیں نظر انداز کر دیا اور اپیل حقائق کے برعکس مسترد کردی۔ میشا شفیع کے وکیل نے استدعا کی کہ ان کی موکلہ کی درخواست پر گورنر پنجاب کے فیصلے کو کالعدم قرار دیا جائے اور علی ظفر کے خلاف انہیں ہراساں کرنے پر کارروائی کا حکم دیا جائے۔ عدالت نے گلوکارہ میشا شفیع کی درخواست پر سماعت کرتے ہوئے صوبائی محتسب، گورنر پنجاب اور علی ظفر کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر لیا ۔  


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟