ملک  بھر میں شوگر ملوں سے چینی کی سپلائی بند

  ملک میں سیاسی بحران کی وجہ منافع خور میدان آگئے ہیں چینی سمیت دیگر اشیائ کی قیمتوں اضافہ ہورہا ہے جبکہ شوگر ملز مالکان کی ہڑتال کی وجہ سے چینی کی سپلائی بند ہوئے مسلسل آٹھویں روز بھی جاری رہی   ۔اس ضمن میں لاہور کے  بازاروں میں چینی کی سپلائی مہنگے داموں میں ہو رہی ہے۔ عام مارکیٹ میں چینی ایک ہفتہ قبل 53روپے فی کلو فروخت ہورہی تھی جبکہ اب اس کی قیمت 65روپے فی کلو ہوگئی ہے ، ذرائع کے مطابق گوداموں میں چینی وافر مقدار میں موجود ہے ، جو ملکی ضروریات سے کئی زیادہ ہے ، اسی مقدار کو مد نظر رکھتے ہوئے موجودہ حکومت نے تین لاکھ ٹن چینی برآمد کرنے کی پہلے سے اجازت دی رکھی ہے تاکہ  زرمبادلہ  حاصل ہوسکے  مگر اس حکم کا با قاعدہ طور پر کوئی نوٹیفکیشن جاری نہیں کیا جاسکا۔ ذرائع نے مزید بتایا کہ ایکس مل ریٹ 53روپے مانگا جارہا ہے جبکہ گزشتہ روز ایک روپے اضافہ سے 56روپے اور ریٹیل ساٹھ روپے سے چینی فروخت ہو رہی جبکہ کمشنر لسٹ میں چینی کا ریٹ 51 روپے درج کیا ہوا ہے ٴذرائع کے مطابق عالمی مارکیٹ میں چینی کی قیمت انتہائی کم ہو چکی ہے ٴاس لئے ملز چینی برآمد کرنے پر سبسڈی مانگ رہے ہیں جو نہ ملنے کی وجہ سے ملز مالکان انتقامی کارروائیوں پر اتر آتے ہیں ٴدوسری طرف سپلائی کو روک کر قیمتوں میں اضافہ کیا جارہا ہے ۔جبکہ سبزیوں پھلوں اور دیگر اشیائ کی قیمتوں میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے اور انتظامیہ خاموش نظر آرہی ہے