23 ستمبر 2018
تازہ ترین
ملکی دفاع کیلئے جان بھی حاضر ، فنکار

فنکاروں نے شہدا کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ ملکی دفاع کیلئے جان بھی حاضر ہے۔ 6ستمبر1965 کا تاریخی دن آج بھی پوری قوم کو یاد ہے، ہمارے ملک کی سرحدوں کی حفاظت کرتے ہوئے پاک فوج کے جوانوں نے جس طرح اپنی قیمتی جانوں کا نذرانہ پیش کیا ، اس پر پوری قوم کو فخر ہے۔ آج اس بات کو سال نہیں بلکہ دہائیاں بیت چکی ہیں لیکن پھر بھی شہدا کی بے مثال قربانیوں کو خراج عقیدت پیش کرنے کا سلسلہ جاری ہے۔ جس طرح زندگی کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والے یوم دفاع کو مناتے ہیں، اسی طرح شوبز سے وابستہ لوگ بھی یوم شہدا کو روایتی جذبے کے ساتھ مناتے اور اس حوالے سے منعقدہ تقریبات میں شرکت کرتے ہیں۔ اس سلسلہ میں اداکار مصطفیٰ قریشی، غلام محی الدین ، مدیحہ شاہ، زارا شیخ، ولی حامد علی خاں اور ریجا علی نے کہا ہے کہ دشمن کی فوجوں نے جب سرحد پار کرتے ہوئے اپنے ناپاک عزائم دکھائے تو پاک فوج کے جوانوں نے انہیں بھرپور انداز سے جواب دیا۔ ایک طرف ہوائی حملے جاری تھے تو دوسری جانب گہرے سمندروں میں پاک بحریہ کے جوان سرحد کی حفاظت کرنے پر لگے تھے۔ یہی نہیں بری فوج کے دستوں نے سرحدوں کو چاروں طرف سے محفوظ رکھنے کیلئے ایسی حکمت عملی اپنائی کہ دشمن کو منہ کی کھانی پڑی۔ انہوں نے کہا کہ تاریخ گواہ ہے کہ جس طرح پاکستان کی فوج نے بھارت کی تعداد میں بہت بڑی فوج کو نقصان پہنچایا اور ان کے فوجیوں کو قیدی بنایا، اس پر پوری دنیا حیران تھی۔ یہ ہمارے جوانوں کا جذبہ ہی تھا اور اس کے ساتھ عام شہریوں نے بھی افواج پاکستان کے شانہ بشانہ ہر قربانی کیلئے جو عزم دکھایا، اس کو لفظوں میں بیان کرنا مشکل ہے۔ جہاں تک بات فنون لطیفہ سے وابستہ فنکاروں کی ہے تو ملکہ ترنم نورج ہاں کی خدمات کسی سے ڈھکی چھپی نہیں ہیں۔ انہوں نے جس طرح ملی نغمے گا کر فوجی جوانوں کا حوصلہ بڑھایا، وہ سماں بھی دیدنی تھا۔ ہم شہدا چھ ستمبر کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے افواج پاکستان کو سلام کرتے ہیں۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟