16 نومبر 2018
تازہ ترین
 مقبوضہ کشمیر،  مسلمانوں پر حملوں کیخلاف مظاہرے

کشمیر میڈیا سروس کے مطابق مظاہرے کی قیادت حریت رہنمائوںشبیر احمد ڈار ، محمد اقبال میر، امتیاز احمد ریشی ، غلام نبی وار اور انسانی حقوق کے کارکن محمد احسن انتو نے کی۔ مظاہرے میں دیگر لوگوں کے علاوہ شکیل الرحمان ،منظور احمد، رئوف کشمیری نے بھی شرکت کی۔ مظاہرے کے شرکا نے پلے کاڑز اور بینرز اٹھا رکھے تھے جن پر بھارت اور کٹھ پتلی انتظامہ کے کشمیر دشمن اقدامات کے خلاف نعرے درج تھے۔ انہوں نے آزادی کے حق میں اور بھارت کے جبر ی قبضے کے خلاف  فلک شگاف نعرے لگائے۔  جبکہ سےد علی گےلانی ، مےر واعظ عمرفاروق اور محمد ےاسےن ملک پر مشتمل مشترکہ مزاحمتی قیادت نے نےا 15روزہ احتجاجی کلینڈر جاری کردےا ہے جس کے تحت 26جنوری کو یوم سیاہ مناےا جائے گا جبکہ 20اور27جنوری کویوم مزاحمت کے طور مکمل ہڑتال ہوگی اور پرامن احتجاجی مظاہرے کئے جائےں گے۔ دوسری جانب مقبوضہ کشمےر مےں مےرواعظ عمر فاروق کی زےر قےادت حرےت فورم نے فرقہ وارانہ اتحاد کو وقت کا ناگزیر تقاضا قرار دیتے ہوئے کشمےری مسلمانوں سے اپیل کی ہے کہ وہ ایسے شر پسند عناصرسے ہوشیار رہیں جو اپنے ذاتی مفادات کےلئے روایتی فرقہ ورانہ ہم آہنگی کے ماحول کو نقصان پہنچانے کی کوشش کررہے ہےں۔ کشمےرمےڈےا سروس کے مطابق فورم کے ترجمان نے سرےنگر سے جاری اےک بےان مےں کہا کہ جب پوری کشمیری قوم اپنے عظیم نصب العین کے حصول کےلئے مال وجان کی قربانیاں پیش کر رہی ہے، سرےنگر میں چند قوم دشمن عناصر اور بھارتی ایجنسیاں سرگرم عمل ہوگئی ہےں جو اپنے مخصوص اور حقیر مفادات کےلئے رواں جد وجہد آزاد ی کو فرقہ واریت کی آگ مےں جھونکنے کی کوشش کررہی ہےں۔  


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟