21 نومبر 2018
تازہ ترین
معاہدہ ختم ہوا تو ایٹمی پروگرام دوبارہ شروع ، ایران  

۔ ایرانی توانائی ایجنسی کے سربراہ کہتے ہیں کہ ٹرمپ انتظامیہ نے معاہدہ منسوخ کیا تو اپنے ایٹمی پروگرام پر دوبارہ کام شروع کر دیں گے۔ ایٹمی معاہدے کی پہلی سالگرہ پر پریس کانفرنس میں ایرانی صدر حسن روحانی نے کہا کہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل سے منظوری کے بعد جوہری معاہدہ اب ایک بین الاقوامی دستاویز بن چکا ہے، اس سے پہلے نومنتخب امریکی صدر نے انٹرویو میں کہا تھا کہ ایران سے جوہری معاہدہ اب تک کئے گئے خراب ترین معاہدوں میں سے ایک ہے اور وہ اس سے مطمئن نہیں ۔ ادھر عرب ٹی وی کو انٹرویو میں ایرانی توانائی ایجنسی کے سربراہ علی اکبر صالحی نے واضح طور پر کہا کہ ایران ایٹمی معاہدے میں کوئی بھی ترمیم یا رد و بدل ہرگز برداشت نہیں کرے گا۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ یا تو معاہدے کو موجودہ شکل میں قبول کرے یا مسترد کرکے نتائج بھگتنے کی تیاری کرے، ٹرمپ انتظامیہ نے معاہدہ منسوخ کیا تو دوبارہ پروگرام پر کام شروع کر دیں گے ۔  


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟