25 اپریل 2018
تازہ ترین
معاشی ترقی پر مشیر خزانہ کا عدم اطمینان

مشیر خزانہ مفتاح اسماعیل نے کہا ہے کہ ملک کی معاشی ترقی کی رفتار سے مطمئن نہیں، جبکہ پاکستان کو سالانہ 10 فیصد اقتصادی ترقی کی رفتار سے آگے بڑھنا ہوگا۔ اسلام آباد میں سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے مشیر خزانہ مفتاح اسماعیل نے کہا کہ پاکستان میں معاشی پالیسیز درست سمت ہیں، معاشی ترقی کی شرح 5 سال میں ساڑھے 4 فیصد سالانہ رہی تاہم معاشی ترقی کی رفتار سے مطمئن نہیں، اسے اور زیادہ ہونا ہے، پاکستان کو سالانہ 10 فیصد اقتصادی ترقی کی رفتار سے آگے بڑھنا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ رواں سال روپے کی قدر میں 10 فیصد تک کمی ہوئی، روپے کی بے قدری کے باوجود مہنگائی میں اضافہ نہیں ہوا، روپے کی قدر میں کمی آزادانہ پالیسی کی وجہ سے ہوئی،  روپے کی قدر میں کمی سے مارچ میں برآمدات 24 فیصد بڑھیں، آئندہ دو ماہ میں برآمدات 20 فیصد مزید بڑھیں گی۔ مشیر خزانہ کا کہنا تھا کہ گزشتہ پانچ سال میں صنعت، زراعت اور خدمات سمیت تمام شعبوں میں ترقی ہوئی، آج ملک میں 10 ہزار میگا واٹ بجلی اضافی بنائی جارہی ہے، بجلی اور گیس موجود ہے، صنعتی ضرویات پوری کر سکتے ہیں۔ مفتاح اسماعیل نے کہا کہ گزشتہ پانچ سال میں معیشت کی بہتری کے اقدامات کئے گئے، رواں سال پاکستان کی جی ڈی پی 5.8 فیصد رہے گی، مہنگائی کی شرح کو4 فیصد سے نیچے رکھا گیا ۔ ان کا کہنا تھا کہ آئندہ بجٹ میں ٹیکس ریلیف دے رہے ہیں،  ٹیکس میں متوسط طبقے کو ریلیف دیا جارہا ہے، جبکہ ٹیکس گوشوارے جمع نہ کرانے والے زمین نہیں خرید سکیں گے، نادرا کے ساتھ مل کر ٹیکس گزاروں کی تعداد بڑھائیں گے، ٹیکس چور غیر ملکی دورے کرتے پھرتے ہیں اور ٹیکس نہیں دیتے، نادرا 10 لاکھ لوگوں کا ڈیٹا دے رہا ہے جو ٹیکس دینے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔


عوامی سروے

سوال: آپ کے خیال میں پاکستان کا اگلا وزیراعظم کون ہونا چاہیے؟