12 نومبر 2018
مصوری کے ماہر روبوٹ

دنیا بھر میں روبوٹس سے بہت سے کام لئے جارہے ہیں اور اب یہ باقاعدہ مصوری کے ماہر ہوگئے ہیں اور اس ضمن میں روبوٹ نے مصوری اور پینٹنگز کے شاہکار بناکر دنیا بھر سے داد اور انعام بھی وصول کئے ہیں۔ کئی برس قبل سٹینفرڈ کے ایک انجینئر اینڈریو کونریو نے روبوٹ کو یہ فن مصنوعی ذہانت (آرٹی فیشل انٹیلی جنس)، نیورل نیٹ ورک اور فیٹ بیک لوپس کے ذریعے سکھایا اور اب یہ ایک بین الاقوامی مقابلہ بن چکا ہے۔ 2018 کے روبوٹ مصوری کے مقابلے میں دنیا بھر سے 19 ٹیموں نے حصہ لیا اور اپنی جدت کے ذریعے روبوٹ سے حیرت انگیز تصاویر بنوائیں۔ بعض ماہرین نے ایسے روبوٹ بھی پیش کئے جو ماہر آرٹسٹ کی طرح کلائی اور ہاتھ گھما کر رنگ کا  سٹروک لگاتے ہیں، جبکہ انہیں چلانے کیلئے جدید ترین الگورتھم اور سافٹ ویئر بھی پیش کئے گئے تھے۔ بعض ایسے روبوٹس بھی رکھے گئے جو ایک وقت میں ایک سے زائد برش سے پینٹنگ کرتے نظر آئے اور ماہرین یہ صلاحیت دیکھ کر دنگ رہ گئے۔ اس ضمن میں پہلا انعام ایک مصور روبوٹ، کلائوڈ پینٹر کو دیا گیا ،جس نے ڈیپ نیورل نیٹ ورک اور جدید الگورتھم کے ذریعے ایک شاندار تصویر بنائی جس کے کئی حصے ہیں۔ اس مقابلے میں عوام اور ماہر مصور، دونوں نے ہی اپنی اپنی رائے پیش کی جس کی بنیاد پر اول نمبر پر آنے والے روبوٹ کی ٹیم کو چالیس لاکھ ڈالر انعام پیش کیا گیا ،جبکہ دس بہترین روبوٹس کو بھی اچھی خاصی رقم بطور انعام دی گئی۔ اول آنے والے کلائوڈ پینٹر کو ایک امریکی انجینئر پندار وان ارمان نے بنایا تھا اور اس کا روبوٹ گزشتہ برس تیسرے نمبر پر آیا تھا۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟