25 ستمبر 2018
تازہ ترین
 مس یونیورس1995چیلسی سمتھ چل بسیں

سابق مس یونیورس چیلسی سمتھ45سال کی عمر میں چل بسیں، انہیں جگر کے کینسر کا عارضہ لاحق تھا۔ چیلسی سمتھ کے ترجمان جیروڈکلونسکی کے مطابق چیلسی کو2017میں جگر کے کینسر کا انکشاف ہوا تھا ، پورا سال ہی شدید بیمار رہیں، وہ اس مرض سے لڑتی رہیں اور انتہائی کمزور ہو گئیں۔ شدید بیماری میں وہ گزشتہ ماہ اپنی والدہ کے گھر منتقل ہو گئی تھی ، جو پنسلوانیا میں واقع ہے اور وہ آخری وقت تک اپنی والدہ ہی کی رہائش گاہ میں قیام پذیر رہیں۔ ان کے اہل خانہ نے کہا ہے کہ چیلسی سمتھ دنیا بھر میں نوجوان خواتین کیلئے ایک بہترین مثال ہیں۔ چیلسی سمتھ نے اپنے بارے میں ہیوسٹن پوسٹ کو بتایاتھا کہ وہ لوگ جو میرے بارے میں جاننا چاہتے تو میں ان کو بتانا پسند کروں گی اور یہ جاننا ان کیلئے بھی ضروری ہے کہ میں آدھی سیاہ فام اور آدھی سفید فام ہوں اور یہ میرے لئے کسی قسم کے نقصان کا باعث نہیں بنا۔ سابق مس یونیورس چیلسی سمتھ 22سال کی عمر میں اس ٹائٹل کی حقدار بنیں اور1995میں مس یونیورس قرار پائیں، وہ ٹیکساس سے تعلق رکھنے والی واحد خاتون تھیں ،جس کے سرپر مس یونیورس کا تاج سجا۔ ان کی والدہ سفید فام اور ان کے والد افریقہ سے تعلق رکھے والے سیاہ فام امریکن تھے۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟