15 نومبر 2018
مرغیوں کیلئے مہنگے پیمپرز کا رجحان

امریکا کے بعض بڑے شہروں میں امیر افراد نے کتے اور بلیوں کی جگہ اب مرغیاں پالنا شروع کردی ہیں، لیکن جگہ جگہ بیٹ کرنے کی وجہ سے مرغیوں کو مہنگے پیمپرز پہنائے جارہے ہیں۔ ڈین ور، نیویارک اور لاس اینجلس کے لوگ اپنے مرتبے کی علامت کے لئے اعلیٰ نسل کی مرغیاں پال رہے ہیں اور ان مرغیوں کو پیمپرز پہنائے جارہے ہیں۔ اس رجحان کو دیکھتے ہوئے نیو ہیمپشائر کی ایک خاتون جولی بیکر نے مرغیوں کے لئے مہنگے اور دیدہ زیب پیمپرز بنائے ہیں اور اس کاروبار سے ہر سال 60 لاکھ روپے کما رہی ہیں۔ اب سے 10 برس قبل جولی نے اپنی بیٹی کے ساتھ ایک چھوٹے سے فارم میں مرغیاں پالنے کا آغاز کیا۔ اس دوران ایک ویڈیو دیکھ کر انہیں خیال آیا کہ کیوں نہ مرغیوں کے فضلے سے گھر کو صاف رکھنے کے لئے انہیں پیمپر پہنا دیئے جائیں۔ اس کے بعد جولی نے کئی سائز اور ڈیزائن کے پیمپرز تیار کئے۔ اس کے بعد مرغیوں کے فارم کے متعدد مالکان نے ان سے رابطہ کیا اور اس کے بعد جولی 2010 میں اپنی بیٹی کے ساتھ ایک آن لائن پیمپر سٹور کھولا اور اسے  پیمپرڈ پولٹری کا نام دیا،  خلاف توقع ان کا کام اتنا مشہور ہوا کہ پورے ملک سے انہیں آرڈر ملنا شروع ہوگئے۔ اب وہ ایک ماہ میں 500 سے 1000 ڈائپر فروخت کر رہی ہیں جن کی قیمت 10 سے 22 ڈالر تک ہے۔ اس کے علاوہ وہ مرغیوں کے پروں کو محفوظ رکھنے والا لباس اور پیٹھ ڈھانپنے کیلئے زین نما ایپرن بھی تیار کر رہی ہیں۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟