14 نومبر 2018
تازہ ترین
ماہرہ کو ووٹ کاسٹ نہ کرنے پرشدید تنقید

اداکارہ ماہرہ خان پاکستان میں موجودنہ ہونے کے باعث  الیکشن میں ووٹ کاسٹ نہیں کرسکیں۔  اداکارہ ماہرہ خان عام انتخابات کے موقع پر ملک میں موجود نہیں ہیں بلکہ ہم ایوارڈکے سلسلے میں دیگر فنکاروں کے ہمراہ کینیڈا کے شہر ٹورنٹو میں موجود ہیں جس کے باعث وہ اپنا ووٹ کاسٹ نہیں کرسکیں گی۔ ماہرہ خان نے  انسٹاگرام پر پاکستانی جھنڈے کی تصویر شیئر کراتے ہوئے لکھامیری بھرپور کوشش تھی کہ انتخابات کے روز ملک میں موجود رہوں لیکن بدقسمتی سے میں ایسا نہ کرسکی، میں اپنے کام کے سلسلے میں پاکستان میں موجود نہیں ہوں اور اپنا کام ٹال بھی نہیں سکتی تھی جو اس ماہ کے شروع میں شیڈول تھا۔ میں بہت دلگرفتہ اوربھاری دل کے ساتھ  کہنا چاہتی ہوں کہ میں اس بار اپنا حق رائے دہی استعمال نہیں کرسکوں گی۔ تاہم سوشل میڈیا پر ماہرہ خان کی پاکستان میں غیر موجودگی کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا جارہا ہے۔ گلوکار و اداکار فرحان سعید نے ہم ایوارڈ کے سلسلے میں کینیڈا جانے والے فنکاروں پرتنقید کرتے ہوئے لکھا تھا کہ میرے شعبے کے کچھ فنکار ایک انتہائی اہم موقع پر ملک سے باہر جارہے ہیں  جو دل دکھانے والی بات ہے، مہربانی کرکے ہمارے ملک کے مستقبل کو اتنا ہلکا نہ لیں۔ اداکار عمران عباس نے بھی الیکشن کے دوران ایوارڈ کی تقریب منعقد کرنے پر غصے کا اظہار کرتے ہوئے کہا کاش ایوارڈ کی تقریب ابھی منعقد نہ ہوتی کیونکہ بہت سے پاکستانی اداکار الیکشن سے ایک روز قبل پاکستان سے چلے گئے ہیں، ایوارڈ کی تقریب الیکشن کے باعث ملتوی کی جاسکتی تھی۔ ایک صارف نے لکھا یہ تمام اداکار جو ہمیں حب الوطنی کی یاد دلاکر کہتے ہیں کہ ہم ان کی فلمیں دیکھیں لیکن جب پاکستان کو ان کی ضرورت ہے تو یہ سب ووٹ ڈالنے کے بجائے کینیڈا میں مزے کررہے ہیں  ایک صارف نے اپنے غصے کا اظہار کرتے ہوئے لکھا جن اداکاروں کو جتوانے کے لیے ہم نے ووٹ ڈالے آج وہی اداکار اپنے ملک میں ووٹ نہیں ڈال رہے۔ ان لوگوں کے لیے ایک ایوارڈ شو ملک سے زیادہ اہم ہے، ان تمام اداکاروں نے بہت مایوس کیا ،گلوکار بلال خان بھی ٹورنٹو میں موجود تھے تاہم  انہوں نے ٹوئٹ کرتے ہوئے کہا کہ وہ ووٹ ڈالنے کے لیے ٹورنٹو سے لاہور آئے ہیں تاکہ اپنا حق رائے دہی استعمال کرسکیں  اور آج رات کی فلائٹ سے دوبارہ ٹورنٹو چلے جائیں گے۔ کیونکہ ہر ووٹ گنا جائے گا اور یہ ہمارا فرض ہے کہ ہم ووٹ کاسٹ کریں۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟