23 مئی 2019
تازہ ترین
فالتو سمجھی جانے والی کتاب 1,250ڈالر میں فروخت

فالتو سمجھی جانے والی کتاب 1,250ڈالر میں فروخت

ٹینیسی  امریکا کی ایک لائبریری نے آخر وقت تک کتاب کو کچرا دان میں ڈالنے کی بجائے اور اسے رکھنے کا فیصلہ کیا ،جس کے بعد معلوم ہوا کہ یہ ایک نایاب ایڈیشن تھا جس کی قیمت 1250 ڈالر یا پونے دو لاکھ پاکستانی روپے کے برابر ہے اور اسی قیمت میں اسے فروخت کیا گیا۔ امریکی ریاسٹ ٹینیسی کے شہر میمفس میں واقع میمفس پبلک لائبریری میں آنے والوں نے دیکھا کہ لائبریری سے باہر پھینکی جانے والی کتابوں کا ایک انبار کوڑے کے ڈھیر پر پڑا تھا۔ اس میں ایک ناول  ڈو اینڈروئڈز ڈریم آف الیکٹرک شیپ کا پہلا ایڈیشن تھا جسے معروف مصنف فلپ کے ڈک نے تحریر کیا تھا۔ اس ناول پر بعد میں مشہور فلم  بلیڈ رنر بنائی گئی۔ اس کتاب کو باہر پھینکا ہی جارہا تھا کہ ایک شخص نے اسے اٹھایا تو معلوم ہوا کہ 1968 میں شائع ہونے والے اس ناول کا پہلا ایڈیشن ہے جو اب نایاب ہوچکا ہے۔ لائبریری کے عملے سے ایک فرد نے دیکھا کہ اسی طرح کا ایڈیشن ایمیزون پر 3000 ڈالر یعنی چار لاکھ روپے میں فروخت ہورہا ہے۔ لائبریری کی خاتون کارکن نے اسے بھی ایمیزون پر فروخت کےلئے پیش کردیا اور صرف تین ہفتوں میں وہ ناول 1250 ڈالر میں فروخت ہوگیا۔


مزید خبریں

عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟