غوطہ خور  73ہزار درہم  کے نایاب موتی کا مالک بن گیا

 خوش نصیب پیشہ وربحرینی غوطہ خور سیپی کے اندر سے  ملنے والا 73 ہزار درہم  کے نایاب موتی کا مالک بن گیا۔ مقامی روزنامہ کی رپورٹس کے مطابق بحرین کے شہر مناما سے تعلق رکھنے والے خوش نصیب پیشہ ور غوطہ خور احمد الملیکی کو سیپی کے اندر سے 73 ہزار درہم یعنی پاکستانی 23 لاکھ 90 ہزار کا نایاب موتی مل گیا۔ احمد الملیکی نے بتایا کہ ہم عام طور پر سمندر میں جا کر چار مختلف جگہوں پر غوطہ خوری کرتے تھے لیکن تین جگہوں پر خراب سی پی ملنے کے بعد ہم لوگوں نے نئی جگہ جانے کا انتخاب کیا اور حقیقت بھی یہ ہے کہ ہم لوگ بھی یہی سوچ کر وہاں گئے تھے کہ اگر اس جگہ سیپیاں بڑی تعداد میں ملتی ہیں تو پھر اگلی بار مکمل تیاری کے ساتھ واپس آکر موتی کی تلاش کریں گے کیونکہ یہ نئی جگہ ساحل سے بہت دور گہرے سمندر میں ہونے کی وجہ سے لوگوں کی نظر میں نہیں تھی۔ احمد الملیکی نے کہا کہ  ہم اسی جگہ واپس آئے اور بہت سی سیپیوں کو جمع کیا اور جب انہیں کھول کر دیکھا تو اس میں حسین سا موتی پایا، جبکہ میں گزشتہ 10 دس سال سے غوطہ خوری کر رہا ہوں لیکن یہ پہلی بار ہوا کہ مجھے 8.4 قیراط وزنی موتی ملا جس کی قیمت 73 ہزار درہم یعنی پاکستانی 23 لاکھ 90 ہزار روپے ہے۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟