شہباز شریف کے جسمانی ریمانڈ میں توسیع مسترد، جیل بھجوانے کا حکم

احتساب عدالت نے نیب کی جانب سے جسمانی ریمانڈ میں توسیع کی درخواست مسترد کرتے ہوئے صدر مسلم لیگ ن شہباز شریف کو جیل بھجوا دیا۔ احتساب عدالت میں آشیانہ ہائوسنگ سکینڈل سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی۔ نیب پراسیکیوٹر نے کہا شہباز شریف سے تفتیش کا عمل جاری ہے، انکے جسمانی ریمانڈ میں 15روز کی توسیع کی جائے۔ وکیل شہباز شریف نے کہا میرے موکل کا 2011 سے 2017 تک کا ریکارڈ ٹیکس ریٹرن میں شامل ہے، ہر چیز کلیئر ہے، تمام ریکارڈ بھی ٹیکس میں ہے، عدالت سے غلط بیانی کر کے نیب نے ریمانڈ لیا تھا، ٹیکس قوانین میں تحائف کا ذکر کرنا ضروری نہیں تھا، ذاتی 20 کروڑ کی اراضی کی رقم سے تحائف دیئے، تحائف آمدنی سے زائد نہیں ہیں۔ اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کی پیشی کے موقع پر سکیورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے، پولیس اور سکیورٹی اہلکاروں کی بھاری نفری تعینات کی گئی۔ یاد رہے آشیانہ ہائوسنگ سکینڈل میں شہباز شریف کے ریمانڈ کی مدت ختم ہونے پر عدالت پیش کیا گیا۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟