16 جولائی 2018
تازہ ترین
شکست ن لیگ کا مقدر ہے،عمران خان

   پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ شکست ن لیگ کا مقدر بن چکی ہے اور تحریک انصاف اقتدار میں آکر کرپشن کا خاتمہ کرے گی۔ اسلام آباد میں اقلیتی کنونشن سے خطاب کے دوران عمران خان نے کہا کہ قائداعظم کا پاکستان ایک فلاحی ریاست تھی، مدینہ کی فلاحی ریاست میں اقلیتوں کو بھی حقوق حاصل تھے، غریبوں کو بنیادی حقوق دینا ریاست کی ذمے داری ہے، آزاد معاشرے میں قانون غریب کو امیر سے طاقتور کردیتا ہے، مہذب معاشرے میں بےروزگاروں کو فنڈز دیئے جاتے ہیں۔ پاکستان کے آئین کا تمام ابتدائیہ حقوق سے متعلق ہے لیکن پاکستان میں کمزور طبقے کو حقوق نہیں ملتے کیوں کہ قانون کی بالادستی نہیں ہوتی تو کمزور کو نقصان اٹھاناپڑتا ہے، غریب کو انصاف دینے کے لئے ملک کے پاس وسائل نہیں، تعلیم ہر بچے کا بنیادی حق ہے جو کہ اس ملک میں نہیں دیا گیا۔ ڈھائی کروڑ بچے سکول ہی نہیں جاتے۔ ملک میں 45 فیصد بچے غذائی قلت کی وجہ سے بیمار ہیں۔ مغرب میں منی لانڈرنگ کرنے والا لوگوں میں جانے کی جرأت نہیں کرتا لیکن یہاں 300 ارب روپے کی منی لانڈرنگ کرنے والا معصوم بنا ہوا ہے، ایک مجرم پکڑا گیا اور وہ کہتا ہے کہ واپسی پر میرا استقبال کرو، شکست ن  لیگ کا مقدر بن چکی ہے، تحریک انصاف اقتدار میں آکر کرپشن کا خاتمہ کرے گی۔

بعد ازاں تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے کہا ہے کہ پی ٹی آئی نہ ہوتی تو بی بی مریم اور بے بی بلاول باریاں لیتے ،25جولائی کے بعد نئی صبح اور نیا پاکستان نظر آرہا ہے ۔ ضلع وہاڑی کے علاقے بورے والا میں جلسے سے خطاب میں عمران خان نے کہا کہ تحریک انصاف نہ ہوتی تو ن لیگ اور پیپلز پارٹی کی قیادت کے بچے باریاں لگاتے ۔ انہوں نے کہا کہ عوام کے پاس ان دو جماعتوں کے سوا کوئی چوائس نہیں تھی ، ان بچوں نے آج تک کوئی نوکری نہیں کی ، مریم نواز کہتی ہیں میری تو کہیں پراپرٹی نہیں۔ پی ٹی آئی چیئرمین نے یہ بھی کہا کہ جو اتنے سیدھے منہ سے جھوٹ بولے، ایک گھنٹہ کام نہ کیا ہو وہ وزیر اعظم بننے کو تیار ہے۔  عمران خان نے مزید کہا کہ25 جولائی کو دونوں کو شکست دینی ہے، ہم کمزور طبقے کو بہتر بنانے کے لیے اقدامات کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ زرداری اور نواز شریف نے قرضے چڑھا دئیے جس کی قیمت قوم ادا کر رہی ہے، انہوں نے کہا کہ ووٹ کو عزت دو ، کہتا ہوں ووٹ کو عزت دو لیکن چور کو عزت نہ دو ۔ پی ٹی آئی چیئرمین نے یہ بھی کہا کہ جو حکومت جاتی ہے وہ خالی خزانہ چھوڑ کر جاتی ہے اور فضل الرحمان چھوڑ کر جاتی ہے۔

 


عوامی سروے

سوال: الیکشن 2018 کیلئے کونسی جماعت آپکی فیورٹ؟