23 ستمبر 2018
تازہ ترین
 شاہ رخ  ملک کا غدار قرار

کھل کر میدان میں آگئی ہے اور اداکار کو غدار قرار دے دیا۔شاہ رخ خان کو ہندو انتہا پسندوں  اور بی جے پی کو بھارت میں بڑھتی ہوئی انتہا پسندی اورعدم برداشت پر آئینہ دکھانا خاصہ مہنگا ثابت ہورہا ہے اسی لیے ہندو انتہا پسندوں نے شاہ رخ کی فلموںدل والے اور فین کو ناکام بنانے کے باوجود اب بھی  متعصبانہ رویہ اپنا رکھا ہے۔بھارتی حکمراں جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی شاہ رخ خان اور ان کی نئی آنے والی فلم رئیس کے خلاف کھل کر میدان میں آگئی ہے اورپارٹی کے جنرل سیکریٹری کیلاش وجے ورگیا نے ٹوئٹر پر کنگ خان کو ملک کا غدار قرار دیتے ہوئے ان کی فلم رئیس کا بائیکاٹ اور ہریتھک روشن کی فلم کابل کی حمایت کا اعلان کیا ہے۔اپنی ٹوئٹ میں بی جے پی کے جنرل سیکریٹری کیلاش وجے کا کہنا تھا کہ جورئیس ملک کا نہیں وہ کسی کام کا نہیں اور ایک کابل محب وطن کا ساتھ تو ہم سب کو دینا ہی چاہیے۔دوسری جانب  بی جے پی کے رہنما کی ٹوئٹ کے بعد سوشل میڈیا پر ایک نئی بحث کا آغاز ہوگیا ہے  اور انہیں شدید تنقید کا نشانہ بنایا جارہا ہے۔واضح رہے کہ فلم رئیس میں شاہ رخ کے مد مقابل پاکستانی بیوٹی کوئین ماہرہ خان نے مرکزی کردارادا کیا ہے اور فلم 25 جنوری کو نمائش کے لیے پیش کی جائے گی جب کہ اسی روز ہریتھک روشن کی فلم کابل بھی ریلیز ہوگی 


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟