15 نومبر 2018
سیب کے بیج سے کینسر کا علاج

انگریزی زبان کی ایک مشہور کہاوت کے مطابق روزانہ ایک سیب کھانے سے انسان کو ڈاکٹر یا علاج کی ضرورت نہیں پڑتی۔ یہ بات بلاشبہ درست ہے کیونکہ سیب دنیا کا وہ واحد پھل ہے جو صحت اور غذائیت سے بھرپور ہے۔ سیب دس فیصد یا اس سے زائد کی مقدار میں وٹامن (سی) اور فائبر یعنی ریشہ فراہم کرتا ہے جس کا روزانہ استعمال ڈاکٹرز کا تجویز کردہ ہے۔ ان خاص غذائی اجزا میں انسانی جسم کے کینسر سے لڑنے کی صلاحیت موجود ہے۔  اس کے علاوہ سیب میں موجود وافر مقدار فائٹو کیمیکلز اور اینٹی آکسیڈینٹس قوت مدافعت کو بڑھاتے ہیں اور وزن گھٹانے میں مدد دیتے ہیں۔ سیب کا چھلکا اور گودا (فائبر) امراض  قلب، پھیپڑوں کے کینسر، ایستھما، ڈمینشیا اور الزائمر جیسے دیگر امراض کی روک تھام اور علاج میں مدد دیتا ہے۔ خصوصاً سیب کے چھلکے میں موجود ٹریٹرپینوائڈز مختلف اقسام کے کینسر سے لڑنےکی طاقت رکھتے ہیں۔ کیا آپ کو معلوم ہے کہ سیب کے بیج میں وٹامن بی-17) موجود ہے جو آسانی سے دستیاب نہیں ہوتا۔ یہ خاص وٹامن پروناسن فیملی کے پھلوں، جیسے کہ سیب اور خوبانی کے بیجوں میں موجود ہوتا ہے۔ یہ انسانی جسم میں موجود اینٹی آکسیڈینٹس کے ساتھ آمیزش اختیار کرکے نقصان دہ خلیات کو ختم کرتا ہے حالانکہ اس میں موجود قدرتی سائینائڈ نقصان دہ ثابت ہوسکتا ہے لیکن قلیل تعداد سائینائڈ جسم کے انزائمز کے ساتھ مل کر اپنا زہریلا مادہ بے تاثیر کر دیتا ہے۔ البتہ سیب کے بیج  کی صحیح مقدار سائینائڈ کے نقصان سے محفوظ رکھ سکتی ہے۔ وٹامن (بی-17) کینسر اور ٹیومر کی نشونما کو روکتا ہے، ساتھ ہی اس میں ضروری خلیات کو چھوڑ کر کینسر پیدا کرنے والے خلیات کو ختم کرنے کی صلاحیت ہوتی ہے۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟