15 نومبر 2018
سکیورٹی کے نام پر این ایف سی ایوارڈ سے کٹوتی نامنظور ، سندھ، خیبر پختونخوا

۔ سی پیک اور فاٹا کے ترقیاتی کاموں کے حوالے سے وفاق اپنی ذمے داری خود اٹھائے۔ نجی ٹی وی کے مطابق ملاقات میں دونوں جانب سے اتفاق کیا گیا کہ وفاقی حکومت کو کہا جائے کہ صوبوں کو سیلز کی کولیکشن کا کام دیا جائے۔ سیلز ٹیکس کے جمع ہونے والے فنڈز کو این ایف سی کے تحت تقسیم کیا جائے جو صوبہ ٹار گٹ سے زیادہ کلیکشن کریگا اسے 5فیصد ایوارڈ دیا جائے جبکہ اس وقت صوبوں کو صرف سیلز ٹیکس نافذ کرنے کا اختیار ہے۔ اس موقع پر وزیراعلی سندھ سید مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ قابل تقسیم محاصل صوبوں کا اختیار ہے جسے آئینی تحفظ حاصل ہے۔ ملاقات میں اتفاق کے بعد طے پایا کہ صوبوں کے درمیان این ایف سی ایوارڈ پر تعاون بڑھانے کے ساتھ چیئرمین سینیٹ سے رابطہ بڑھایا جائے اور چیئرمین سینیٹ سے 18ویں ترمیم کے تحت اختیارات لئے جائیں۔ ملاقات میں یہ فیصلہ بھی کیا گیا کہ سی پیک اور فاٹا کے ترقیاتی کاموں کے حوالے سے وفاق اپنی ذمے داری خود اٹھائے۔  


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟