29 ستمبر 2020
تازہ ترین
سپاٹ  فکسنگ پر سخت سزا ملنی  چاہئے ، شاہد آفریدی

سپاٹ  فکسنگ پر سخت سزا ملنی  چاہئے ، شاہد آفریدی

پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان شاہد خان آفریدی نے کہا ہے کہ انٹرنیشنل کرکٹ سے ریٹائرمنٹ لے چکا ہوں، لیگ کرکٹ کے لیے فٹ ہوں،اس لیے کھیل رہا ہوں،دنیا بھرمیں کرکٹرزکوباعزت طریقے سے الوداع کیا جاتاہے لیکن  پاکستان میں کرکٹرزکوعزت سے رخصت نہیں کیا جاتا، ڈیڑھ دوسال تک جب تک فٹ ہوں،کرکٹ کھیلنا جاری رکھوں گا، مجھ جیساشخص کسی بھی پارٹی میں ایک دودن چل سکتا ہے،اگلے دن نکالا جاؤں گا۔، شہباز شریف اچھے کام کر رہے ہیں تو ان کی تعریف کرنی چاہئیے ،  ہفتے کے روز نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے مایہ ناز کرکٹر شاہد خان آفریدی نے کہا کہ عزت سے علیحدگی اختیارکرنا چاہتا تھا، ریٹائرمنٹ کا فیصلہ مشکل تھا ، خاندان اوردوستوں نے کہا تھا کہ ریٹائرمنٹ نہ لو تا ہم اب انٹر نیشنل کرکٹ سے ریٹائر ہو چکا ہوں ، لیگ کرکٹ کے لیے فٹ ہوں،اس لیے کھیل رہا ہوں۔ انہوں نے کہا کہ انضمام الحق کوکہا تھا کہ کرکٹرزکواچھے طریقے سے رخصت کیاجانا چاہیے،دنیا بھرمیں کرکٹرزکوباعزت طریقے سے الوداع کیا جاتاہے لیکن  پاکستان میں کرکٹرزکوعزت سے رخصت نہیں کیا جاتا، پی ایس ایل کے انعقاد پر نجم سیٹھی کو کریڈٹ دینا چاہتا ہوں، کرکٹ بورڈ میں جوآتا ہے اپنا آئین لے کر آتا ہے، وزیراعظم کے بعد سب سے بڑی کرسی چیئرمین پی سی بی کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کے چیرمین عمران خان کو مشورہ دیا ہے کہ وہ سنی سنائی باتوں پر یقین نہ کریں ، سنی سنائی باتوں پر رد عمل دینے سے پہلے تصدیق کر لیا کریں اور جب تک اپنی آنکھوں سے نہ دیکھیں ی کوئی فیصلہ نہ کریں ، عمران بھائی کے ہر اچھے کام میں ان کے ساتھ رہا ہوں، وزیر اعلی پنجاب شہباز شریف کی کارکردگی قابل تعریف ہے ، جماعت اسلامی کے امیر سراج الحق متاثر کن شخصیت کے مالک ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ میں سیاست میں فٹ نہیں ہوں اس لیے سیاست میں نہیں آتا ، اگر کسی سیاسی جماعت میں گیا تو اگلے دن اس جماعت پر تنقید کرتا نظر آئوں گا ، مجھ جیسا شخص کسی بھی پارٹی میں ایک دو دن چل سکتا ہے، اگلے دن نکالا جاؤں گا، اسپاٹ  فکسنگ کرنے والوں کو سزا سخت سے سخت سزا ملنی چاہئیے ، ایک سوال کے جواب میں شاہد آفریدی نے کہا کہ دوسری شادی کا کوئی ارادہ نہیں ہے ، عرشی خان کے ساتھ کوئی تعلق نہیں ۔  


مزید خبریں

عوامی سروے

سوال: کیا آپ کووڈ 19 کے حوالے سے حکومتی اقدامات سے مطمئن ہیں؟