26 ستمبر 2018
تازہ ترین
سٹاک مارکیٹ اتار چڑھائو کا شکار

ٹریڈنگ کے دوران انڈیکس49ہزار پوائنٹس کی حد عبور تو کر گیا مگر اس سطح کو برقرا ر نہ رکھ سکا اور کاروباری سیشن کے اختتام پرانڈیکس48800پوائنٹس سے گھٹ کر  48600پوائنٹس کی کم ترین سطح پر بند ہوا ۔مندی کے سبب مارکیٹ میں سرمایہ کاروںکے37ارب سے زائدروپے ڈوب گئے جس سے سرمائے کاحجم98کھرب سے گھٹ کر97کھرب روپے پرآگیا۔اسٹاک مارکیٹ میں منگل کے روز کاروبار کا آغاز تیزی کیساتھ ہوا سرمایہ کارگیس ،بینکنگ ،اسٹیل،توانائی سمیت دیگر منافع بخش شعبوں میں سرگرم دکھائی دیے جس کی وجہ سے کاروبار کے دوران انڈیکس48900اور49000پوائنٹس کی دو بالائی حد عبور کر نے میں کامیاب رہا مگر منافع خوری کی خاطر بعض اسٹاکٹس میں فروخت کے دبائو کی وجہ سے انڈیکس 48600پوائنٹس کی نچلی سطح تک گر گیا ۔منگل کو کاروبارکے اختتام پرکے ایس ای100انڈیکس میں209.89پوائنٹس کی کمی ریکارڈکی گئی جس سے کے ایس ای100انڈیکس48888.54پوائنٹس سے کم ہو کر48678.65پوائنٹس پرآگیااسی طرح کے ایس ای30انڈیکس173.82پوائنٹس کی کمی سے26339.87پوائنٹس اورکے ایس ای آل شیئرزانڈیکس33467.94پوائنٹس سے گھٹ کر33339.95پوائنٹس پربندہوا۔منگل کے روزمارکیٹ کے سرمائے میں37ارب79کروڑ53لاکھ82ہزار15روپے کی کمی ریکارڈکی گئی جس کے نتیجے میںسرمائے کامجموعی حجم98کھرب5ارب59کروڑ32لاکھ54ہزار743روپے سے کم ہوکر97کھرب67ارب79کروڑ78لاکھ72ہزار728روپے رہ گیا۔منگل کومارکیٹ میں37کروڑ96لاکھ53ہزارحصص کے سودے ہوئے اورٹریڈنگ ویلیو22ارب روپے ریکارڈکی گئی جبکہ پیرکے روز31کروڑ60لاکھ62ہزار حصص کے سودے ہوئے تھے اورٹریڈنگ ویلیو20ارب روپے تک محدودرہی تھی ۔پاکستان اسٹاک مارکیٹ میںمنگل کے روز مجموعی طورپر415کمپنیوںکاکاروبارہواجس میں سے130کمپنیوںکے حصص کی قیمتوںمیںاضافہ،272میںکمی اور13کمپنیوںکے حصص کی قیمتوںمیںاستحکام رہا۔کاروبارکے لحاظ سے سوئی سدرن گیس کمپنی2کروڑ25لاکھ،فیصل بینک2کروڑ12لاکھ،عائشہ اسٹیل مل1کروڑ57لاکھ،کے الیکٹرک لمیٹڈ1کروڑ37لاکھ اورپیس پاک لمیٹڈ1کروڑ32لاکھ حصص کے سودوںسے سرفہرست رہے۔قیمتوںمیںاتارچڑھائوکے اعتبارسے یونی لیورفوڈزکے بھائومیں150روپے اوررفحان میظ کے بھائومیں140روپے کااضافہ جبکہ سروس انڈسٹری لمیٹڈکے بھائومیں37.02روپے اورلکی سیمنٹ کے بھائومیں28.52روپے کی نمایاںکمی ریکارڈکی گئی۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟