28 مئی 2020
تازہ ترین
سندھ طاس معاہدہ ، پاکستان نے عالمی بینک کو موقف بتا دیا

سندھ طاس معاہدہ ، پاکستان نے عالمی بینک کو موقف بتا دیا

عالمی بینک کی چیف ایگزیکٹو افسر کرسٹلین جیورجیوا نے پاکستان کے غریب ترین افراد کو بینک قرضوں تک رسائی دینے کیلئے اسٹیٹ بینک آف پاکستان اور پاکستان کے تمام سرکاری و نجی بینکوں سے مشاورت مکمل کر لی ہے اور امکان ہے کہ پاکستان میں چھوٹے اور کم لاگت قرضوں کے پروگرام کے فروغ کیلئے بینک کوئی پروگرام دے گا ،عالمی بینک کی سی ای اونے وفاقی حکومت اور چاروں صوبوں سے مستقبل کی مالیاتی ضروریات پر مذاکرات بھی کیے ہیں اور انہیں انتہائی تعمیری قرار دیا ہے جبکہ پاکستان نے سندھ طاس معاہدے کے تحت بھارت کے ساتھ دریائوں کے پانی کی تقسیم پر تنازع کے حل کیلئے تفصیلی موقف انہیں پیش کر دیا ہے۔عالمی بینک کی سی ای او کے پاکستان کے تین روزہ دورہ کی تکمیل پر عالمی بینک کی جانب سے جاری کی گئیں تفصیلات کے مطابق پاکستان میں قیام کے دوران جیورجیوا نے وزیر اعظم نواز شریف ، وزیر خزانہ اسحق ڈار، اور چاروں صوبائی وزرائے اعلیٰ سے ملاقاتیں کیں۔ دورے کے حوالے سے کرسٹلینا جیورجیوا نے اپنے بیان میں کہا کہ پاکستان معاشی ترقی کی شرح ، نوجوانوں کیلئے روزگار کے مواقع میں اضافہ اور پائیدار معاشی ترقی کے حوالے سے اپنی مالی ضروریات کے بارے میں مکمل طور پر باخبر ہے ، وزیر اعظم اور وزیر خزانہ سے ملاقات میں اس امر پر اتفاق رائے ہوا کہ حکومتی ڈھانچے کی بہتری کے حوالے سے اصلاحات پر عمل درآمد تیز کیا جائے گا ۔


مزید خبریں

عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟