25 اپریل 2018
تازہ ترین
 سرحدوں پر گولے گرتے ہوں تو مذاکرات نتیجہ خیز نہیں ہوسکتے ، بھارت

 بھارتی وزیر خارجہ سشماسوراج نے کہا ہے کہ امن کا جواب امن سے ملے گا تو بات آگے بڑھے گی کیونکہ کنٹرول لائن پر  کشیدگی کے ماحول میں امن مذاکرات کامیاب نہیں ہوتے اور یہ ہی تعلقات میں بہتری میں رکاوٹ کی بڑی وجہ ہے   ۔ پڑوسی ممالک بالخصوص پاکستان کے ساتھ پرامن تعلقات کو حکومت کی پہلی ترجیح قرار دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ بھارت عالمی سطح پر امن اور ترقی کے لئے اپنا کردار ادا کرنے کے لئے تیار ہے ، جب سرحدوں پر گولے گرتے ہوں تو میز پر نتیجہ خیز مذاکرات کی امید نہیں کی جا سکتی ہے ، ہمیں مل کر دہشت گردی کے خلاف لڑنا ہو گا تاہم امن مذاکرات کے لئے ماحول تیار کیا جا سکے ۔ پاکستانی قیادت کے ساتھ بہتر تعلقات کو بھی اولین ترجیح قرار دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہم چاہتے ہیں کہ دونوں ممالک کے درمیان  پرامن فضا میں مذاکرات ہوں اور ان مذاکرات کے ذریعے ہم تصفیہ طلب مسائل کے نتائج تک پہنچ سکیں ، پڑوسی ممالک میں پاکستان کے ساتھ چین اور بنگلہ دیش بھی ہیں ، جن کے ساتھ تعلقات کو فروغ دینے کی ضرورت ہے، بھارت پاکستان کے ساتھ اچھے تعلقات کا خواہشمند ہے اور اس کو دیکھتے ہوئے دونوں ممالک کے درمیان مذاکراتی عمل کو جاری رکھنے کا فیصلہ لیا گیا ہے،  بھارت نے پاکستان پر واضح کر دیا ہے کہ اس کی سرزمین سے بھارت مخالف دہشت گردی کو بند کرنا ہو گا ، سرحد پر دہشت گردی کا خاتمہ کرنے کے لئے پاکستان کو اقدامات اٹھانے ہی ہوں گے ۔


عوامی سروے

سوال: آپ کے خیال میں پاکستان کا اگلا وزیراعظم کون ہونا چاہیے؟