23 ستمبر 2018
تازہ ترین
سام سنگ بھی چوری کرنے کو تیار

ایپل کے آئی فونز وہ سمارت فونز ہیں جس کے ہارڈوئیر اور ڈیزائن وغیرہ اینڈرائیڈ ڈیوائسز میں کاپی کیے جاتے ہیں اور لگ بھگ سب کچھ ہی چرا لیا جاتا ہے۔ گزشتہ سال ایپل کے آئی فون ایکس  کا ڈیزائن اب تک متعدد اینڈرائیڈ فونز میں استعمال کیا جاچکا ہے اور اور ابھی تو متعدد ایسے فونز سامنے آنا باقی ہیں۔ لگ بھگ ہر اینڈرائیڈ فون تیار کرنے والی کمپنی اس وقت آئی فون ایکس کے نوچ ڈیزائن کو کاپی کررہی ہے ، مگر ایک کمپنی ہے جو اب تک اس ٹرینڈ کا حصہ نہیں بنی اور وہ ہے سام سنگ۔ جی ہاں سام سنگ وہ کمپنی ہے جس پر ماضی میں متعددبار ایپل کے ڈیزائن چرانے کا الزام عائد کیا گیا بلکہ عدالتوں میں ثابت بھی ہوا جس کے عوض وہ کروڑوں ڈالرز ایپل کو ادا بھی کرچکی ہے۔ ہوسکتا ہے کہ آپ کو علم نہ ہو مگر سام سنگ نے ایک کتاب بھی تحریرکررکھی ہے کہ ایپل کے آئی فون کے ڈیزائن کو کس طرح چرانا چاہئے۔ تاہم جنوبی کورین کمپنی نے اب تک آئی فون ایکس کے نوچ ڈسپلے جیسا کوئی فون متعارف نہیں کرایا مگر اس کے ایک جلد متعارف کرائے جانے والے فون میں اس کا بیک ڈیزائن ضرور کاپی کیا جارہا ہے۔ اگر آپ ان تمام فونز کے بیک پر غور کریں تو ایک چیز یکساں نظر آئے گی اور وہ ہے کیمرہ پوزیشن جو کہ ڈیوائس کے درمیان میں ہوتا ہے، یا یوں کہہ لیں کہ سام سنگ کا مخصوص انداز ہے۔ اس کا فرنٹ تو کمپنی کے دیگر فونز جیسا ہی ہے مگر اس کا بیک لگ بھگ ایپل کے آئی فون ایکس جیسا ہے۔ اب تک سام سنگ کی جانب سے کیمرے کو سینٹر میں رکھا جارہا تھا مگر اچانک اسے بائیں جانب کے اوپری کونے میں دے دیا گیا جو کہ کافی حیران کن ہے۔  نائن سٹار اور گلیکسی اے نائن اسٹار لائٹ آئندہ چند ہفتوں میں چین میں متعارف کرائے جانے کا امکان ہے اور امریکا میں اسے ممکنہ طور پر پیش نہیں کیا جائے گا اور اس کی وجہ بھی واضح ہے کیونکہ حال ہی میں ایک امریکی عدالت نے آئی فون کے ڈیزائن چوری کرنے پر سام سنگ کو ایپل کو 50 کروڑ ڈالرز سے زائد ادا کرنے کا حکم دیا تھا۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟