15 نومبر 2018
زیادہ خربوزہ کھانا بلڈ شوگر لیول بڑھانے کا باعث

خربوزے رسیلے اور مزیدار ہونے کے ساتھ صحت کے لئے انتہائی فائدہ مند بھی ہیں۔ اس میں اینٹی آکسیڈنٹس، وٹامنز اور دیگر اجزا موجود ہوتے ہیں، جو بینائی بہتر بنانے، بلڈ پریشر مستحکم کرنے اور فشار خون کو   بلند کرنے میں مدد کرتے ہیں۔ لیکن ہر چیز ایک حد تک فائدہ مند ثابت ہوسکتی ہے، اگر مفید چیز کو بھی حد سے زیادہ کھایا جائے تو وہ نقصان پہنچانے لگتی ہے۔ اس اصول کا اطلاق خربوزے پر بھی ہوتا ہے۔ خربوزے کا بہت زیادہ استعمال صحت کے لےے مضر ثابت ہوسکتا ہے۔ اگر ذیابیطس کے شکار نہیں مگر اس کی علامات موجود ہیں تو زیادہ مقدار میں خربوزے کھانا نقصان دہ ہوسکتا ہے، اس میں مٹھاس کافی زیادہ ہوتی ہے جو بلڈ شوگر لیول بڑھانے کا باعث بنتی ہے۔ ذیابیطس کے مریضوں کو اسے روز کھانے کے لئے پہلے ڈاکٹر سے مشورہ کرنا چاہئے۔ ویسے زیادہ خربوزے کھانے سے آنتوں پر اثرات مرتب نہیں ہوتے، تاہم اس کے بعد پانی پینے سے گریز کرنا چاہئے، کیونکہ اس میں پانی کی مقدار کافی زیادہ ہوتی ہے جبکہ پانی پینے سے صحت متاثر ہونے کا خدشہ ہوتا ہے۔ رات کے وقت خربوزے کھانے سے گریز کرنا چاہئے کیونکہ اس وقت اس پھل میں موجود مٹھاس کو میٹابولزم کے لئے جلانا کافی مشکل ہوسکتا ہے۔ رات کو نظام ہاضمہ بھی معمول کے مقابلے میں کافی سست ہوتا ہے۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟