24 اپریل 2019
تازہ ترین
زرداری کیخلاف 2 خواتین کی گواہ بننے کی درخواست نیب کو موصول

زرداری کیخلاف 2 خواتین کی گواہ بننے کی درخواست نیب کو موصول

 جعلی اکائونٹس کیس کی سماعت کے دوران نیب پراسیکیوٹر نے عدالت کو بتایا کہ نیب کو کیس میں 2 ملزم خواتین کی جانب سے وعدہ معاف گواہ بننے کی درخواستیں موصول ہوئی ہیں۔ اسلام آباد میں احتساب عدالت کے جج ارشد ملک نے جعلی بینک اکائونٹس سے متعلق نیب ریفرنس کی سماعت کی۔ آصف زرداری اور فریال تالپور دوسری مرتبہ عدالت میں پیش ہوئے۔ تاہم دونوں حاضری لگوانے کے بعد واپس روانہ ہوگئے۔ اس موقع پر احتساب عدالت میں سخت سیکیورٹی انتظامات کئے گئے تھے، جوڈیشل کمپلیکس کے اندر اور باہر پولیس کے 1500 جوان تعینات تھے۔ کسی بھی غیرمتعلقہ شخص کو احتساب عدالت کے احاطے میں آنے کی اجازت نہیں تھی۔ دوران سماعت نیب پراسیکیوٹر سردار مظفر نے عدالت کو بتایا کہ دو خواتین ملزمان نورین اور کرن کی وعدہ معاف گواہ بننے کی درخواست نیب کو ملی ہے، دونوں کی درخواستوں پر ضابطے کی کارروائی ابھی مکمل نہیں ہوئی۔ سماعت سے قبل آصف زرداری کے وکیل فاروق ایچ نائیک نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ جعلی اکائونٹس سے آصف زرداری کا کوئی تعلق نہیں ہے، جسے وعدہ معاف گواہ بننا ہے بن جائے، ہم کسی کے وعدہ معاف گواہ بننے کی مخالفت نہیں کریں گے اور ہم جرح کریں گے۔ دوسری جانب فریال تالپور نے نیب کی جانب سے جاری کئے گئے نئے نوٹس کے خلاف اسلام آباد ہائی کورٹ سے رجوع کرلیا ہے۔ فریال تالپور کی درخواست میں استدعا گئی ہے کہ جعلی بنک اکائونٹس کیس میں نیب راولپنڈی نے انہیں 17 اپریل کو طلب کیا ہے، خدشہ ہے کہ نیب گرفتار نہ کرلے اس لئے عبوری ضمانت دی جائے۔سابق صدر آصف زرداری کا کہنا ہے کہ صدارتی نظام کے حق میں نہیں تاہم انھیں کوشش کرنے دیں ہم اس کو روکیں گے۔ اسلام آباد احتساب عدالت میں پیشی کے بعد صحافیوں سے گفتگو میں سابق صدر اور شریک چیئرمین پیپلزپارٹی آصف علی زرداری کا کہنا تھا کہ یہ روز پاکستان میں نیا تجربہ کرنے کے موڈ میں ہیں تاہم صورتحال دن بدن بدتر سے بدتر ہوتی جا رہی ہے۔


مزید خبریں

عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟