24 ستمبر 2018
تازہ ترین
ریلوے حکام کا انکوائری کیلئے نیب کو خط

ریلوے حکام نے سابق دور حکومت کے بعض مبینہ کرپشن سکینڈلز کے بارے میں نیب کو انکوائری کے لئے خط لکھ دیا ہے۔ خط میں الزام عائد کیا گیا ہے کہ سابق دور میں ناقص کوالٹی کے 18 سو ہارس پاور ویگن یکطرفہ بڈ میں خریدے گئے،  ناقص ویگنوں کی خریداری کے ذمہ دار سی ایم ای عدنان شفیع اور اے جی ایم عنصر خان ہیں۔ 58 چینی لوکو موٹو بھی سنگل بڈ میں خریدے گئے اور ان کی خریداری کے ذمہ دار سی ایم ای مبین الدین ، طارق خان اور جی ایم ٹیکنیکل شاہد ہیں۔ خط میں بتایا گیا ہے کہ سابق دور حکومت میں خریدے گئے چینی انجنوں کی مرمت کا کام ایک دوسری چینی کمپنی کو دیا گیا، یہ ٹھیکہ دینے میں موجودہ اور سابق چئیر پرسن ملوث ہیں۔ 30 مختلف ریلوے ٹریکس کی مرمت کا کنٹریکٹ 30 ارب روپے میں ایک ہی کنٹریکٹر وارث انٹر نیشنل کو دیا گیا، اس کے علاوہ ریلوے میں بعض منظور نظر افراد کو بھاری معاوضوں اور مراعات سے نوازا گیا۔ خط میں مزید لکھا گیا  کہ ریلوے کے درجنوں پلاٹس لیز پر آئل کمپنیوں اور بااثر شخصیات کو اونے پونے داموں دیا گیا، جبکہ خط میں امریکا سے خریدے گئے 4 ہزار ہارس پاور کے 55 لوکو موٹیو کا بھی ذکر ہے جن کے بارے میں کہا گیا ہے کہ انہیں دوگنی قیمت میں خریدا گیا، جبکہ یہی لوکوموٹیو بھارت نے آدھی قیمت میں خریدے۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟