پاکستان نے سکاٹ لینڈ سے سیریز جیت لی

 

پاکستان نے دوسرے ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل میں اسکاٹ لینڈ کو 84 رنز سے شکست دے کر سیریز 0-2 سے اپنے نام کرلی۔ اسکاٹ لینڈ کے دارالحکومت ایڈنبرا میں کھیلے جارہے دوسرے ٹی ٹوئنٹی میں پاکستان نے پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے مقررہ 20 اوورز میں 6 وکٹ کے نقصان پر 166 رنز بنائے جس کے جواب میں اسکاٹ لینڈ کی پوری ٹیم 82 رنز پر پویلین لوٹ گئی۔

اسکاٹ لینڈ کی جانب سے جارج منسی اور کائیل کوئٹزر نے اننگز کا آغاز کیا لیکن محمد عامر کی جگہ ٹیم کا حصہ بننے والے محمد عثمان خان نے تیسری ہی گیند پر منسی کو پویلین واپس بھیج دیا جب کہ کپتان کائیل بھی ایک رنز پر محمد عثمان کا شکار بنے۔قومی ٹیم کی جانب سے فہیم اشرف نے3، عثمان خان نے 2 وکٹیں حاصل کیں۔

اس سے قبل میچ کا ٹاس قومی ٹیم کے کپتان سرفراز احمد نے جیٹ کر پہلے خود بیٹنگ کا فیصلہ کیا، پاکستان کی جانب سے فخر زمان اور احمد شہزاد نے ٹیم کو اچھا آغاز فراہم کیا اور پہلی وکٹ 60 رنز کے مجموعی اسکور پر گری، احمد شہزاد 24 رنز کی اننگز کھیل کر پویلین واپس لوٹے۔

اگلے ہی اوور میں فخرزمان بھی پویلین جاپہنچے، وہ 33 رنز کی اننگز کھیل کر آؤٹ ہوئے جس میں 6 چوکے شامل تھے جس کے بعد طلعت حسین اور کپتان سرفراز احمد بیٹنگ کے لیے آئے لیکن مارک واٹ نے باؤنڈری لائن پر پچھلے میچ کے ہیرو سرفراز کا ناقابل یقین کیچ پکڑ کر ان کی اننگز کا 14 رنز پر خاتمہ کیا۔

مائیکل لیسک نے ایک ہی اوور میں پہلے حسین طلعت کو پویلین واپس بھیجا، وہ 17 رنز کی اننگز کھیل سکے جب کہ ایک ہی گیند بعد آصف علی بھی بغیر کوئی رنز بنائے لیسک کا شکار بنے تاہم شاداب خان نے شعیب ملک کے ساتھ ملکر 50 رنز کی عمدہ شراکت قائم کی اس دوران شاداب خان 17 رنز بناکر پویلین واپس لوٹ گئے تاہم شعیب ملک ناقابل شکست 49 رنز کی جارحانہ اننگز کھیلنے میں کامیاب رہے جس میں 5 چھکے بھی شامل تھے۔قومی ٹیم میں صرف ایک تبدیلی کی گئی ہے، محمد عامر کی جگہ عثمان خان شنواری کو ٹیم میں شامل کیا گیا ہے

 گرین شرٹس کو سیریز میں 0-1 کی برتری حاصل ہے۔کپتان سرفراز احمد دوسرے میچ میں بھی کامیابی کے ساتھ سیریز اپنے نام کرنے کے خواہاں ہیں جب کہ مخالف ٹیم سیریز برابر کرنے کی کوشش کرے گی۔دوسرے ٹی ٹوئنٹی میچ کے لیے قومی ٹیم میں کسی تبدیلی کا امکان نہیں جب کہ اسکاٹ لینڈ کی بھی سابقہ گیارہ رکنی ٹیم کو ہی دوسرے میچ میں میدان میں اتارے جانے کا امکان ہے۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟