18 ستمبر 2018
تازہ ترین
دوائوں کی درآمد رکنے کا خدشہ

ڈالر کی قدر میں غیر معمولی اضافے سے دوائوں کی درآمد رکنے کا خدشہ پیدا ہو گیا ہے۔ ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدرنمایاں حد تک کم ہونے سے بہت سی دوائوں کی قیمت خرید بڑھ گئی ہے ۔ درآمدی تاجر اس حوالے سے بہت پریشان ہیں۔ میڈیسن مارکیٹ کے ذرائع کے مطابق تاجروں نے دوائوں کی درآمد وقتی طور پر روکنے کا فیصلہ کیا ہے۔ یہ فیصلہ ڈرگز ریگولیٹری اتھارٹی کی جانب سے دوائوں کے نرخ نہ بڑھانے پر کیا گیا ہے۔ کینسر، ہیپاٹائٹس اور دیگر جان لیوا امراض سے بچائو کی دوائیں درآمد کی جاتی ہیں کیوں کہ مقامی ادارے یہ دوائیں نہیں بنا رہیں۔ ڈالر کی قیمت بڑھنے اور دوائوں کی درآمد روکنے کے فیصلے سے کینسر، ہیپاٹائٹس، ہیپا ٹائٹس اے ، ایم ایم آر، روبیلا، ٹائیفائیڈ اور فلو کی ویکسین کی شدید قلت کا خدشہ ہے۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟