دارالحکومت منتقلی کا فیصلہ ، عملدر آمد کو یقینی بنایا جائےگا،امریکہ

امریکی وزیر خارجہ ریکس ٹیلرسن نے کہا ہے کہ صدر ڈونلڈ ٹرمپ بیت المقدس کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کرنے کے ساتھ ساتھ فلسطینیوں اور اسرائیل کے درمیان امن مساعی کو آگے بڑھانے کے پابند ہیں۔ غیرملکی خبر رساں ادارے کو دیئے گئے ایک انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ ٹرمپ مشرق وسطیٰ میں امن عمل آگے بڑھانے کے پابند ہیں۔ ہ ہمیں اب بھی یقین ہے کہ مشرق وسطیٰ میں دیر پا امن کا عمل آگے بڑھانے کا موقع موجود ہے۔ صدر نے مشرق وسطیٰ میں امن و امان کے قیام کے لیے ایک ٹیم بنا رکھی ہے جو اس باب میں کوششیں کررہی ہے۔  اسرائیلی دارالحکومت کی منتقلی کے فیصلے پر عملدر آمد کو یقینی بنایا جائےگا، امریکی شہریوں کا تحفظ اولین ترجیح  ہے ۔  شہریوں کے تحفظ سے متعلق اہم سفارتی عملے کو احکامات جاری کر دیے ہیں۔ امریکی حساس اداروں کو سخت سکیورٹی پلان مرتب کرنے کی ہدایات جاری کردی ہیں۔ اسرائیلی دارالحکومت کی منتقلی کے فیصلہ کو چھ ماہ کے دوران یقینی بنایا جائے گا