خاموش صدر نہیں ہوں گا،عارف علوی

پاکستان تحریک انصاف کی جانب سے نامزد کردہ صدارتی امیدوار ڈاکٹر عارف علوی  نے کہا  ہے کہ انہیں وزیراعظم عمران خان نے پاکستان کی خدمت کے لیے نامزد کیا ہے، وہ خاموش صدر نہیں ہوں گے۔ ملک کے تیرہویں صدر کے انتخاب کے سلسلے میں پارلیمنٹ ہائوس آمد کے موقع پر گفتگو میں عارف علوی نے بھاری اکثریت سے منتخب ہونے کی امید ظاہر کرتے ہوئے کہا، میں کسی ایک سیاسی جماعت کا نہیں، پورے پاکستان کا صدر ہوں گا۔ میں خاموش صدر نہیں ہوں گا۔ پاکستان جس نہج پر ہے، اس کو اس سے نکالنے کی کوشش کریں گے اور آئین کے دائرہ کار کے اندر رہتے ہوئے کام کریں گے۔ ملکی ترقی کے لیے حکومت اگلے چند برس کے دوران شارٹ ٹرم، مڈٹرم اور لانگ ٹرم اقدامات کرے گی۔ عارف علوی نے کہا کہ صدر منتخب ہونے کےبعد وہ تمام پارٹی عہدوں سے مستعفی ہوجائیں گے۔ جب ان سے سوال کیا گیا کہ منتخب ہونے کے بعد وہ پہلا کام کیا کریں گے؟ تو عارف علوی نے جواب دیا کہ میرے گھر کا ڈرینج ٹھیک نہیں، بیڈروم میں پانی کھڑا ہے، پہلا کام اپنے گھر کا ڈرینج کوٹھیک کرانے کا کروں گا ،صدر بن کر کل ایوانِ صدر جاکر ملک کے باقی کام کرنا شروع کروں گا۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟