22 اکتوبر 2018
تازہ ترین
 گڈانی، تیل بردار جہازوں کی بریکنگ پر پابندی

حکومت بلوچستان نے گڈانی شپ بریکنگ پر مزدوروں اور ماحولیاتی تحفظ کے اقدامات کو یقینی بنائے بغیر آئل ٹینکرز کی شپ بریکنگ پر عائد پابندی ختم کر دی ہے۔ حکومت بلوچستان نے یکم نومبر 2016کو گڈانی شپ بریکنگ میں آئل ٹینکر کو توڑے جانے کے دوران دھماکہ اور آتشزدگی سے 30سے زائد قیمتی جانوں کے نقصان کے بعد شپ بریکنگ کے لیے آئل ٹینکرز کی درآمد پر پابندی عائد کردی تھی تاہم شپ بریکنگ انڈسٹری کی بااثر شخصیات اور آئرن سکریپ اور تعمیراتی صنعت کے دبائو کے بعد بلوچستان حکومت نے خاموشی کے ساتھ آئل ٹینکرز کی درآمد پر پابندی ختم کر دی ہے۔ شپ بریکرز ایسوسی ایشن کے سابق چیئرمین دیوان رضوان نے آئل ٹینکرز کی درآمد پر پابندی کے خاتمے کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ 10روز قبل آئل ٹینکرز کی درآمد پر پابندی ختم کردی گئی ہے اور گڈانی شپ بریکنگ پر آئل ٹینکرز کی درآمد شروع کردی گئی ہے۔ دوسری جانب گڈانی شپ بریکنگ ورکرز یونین اور ماحولیاتی تحفظ کے لیے کام کرنے والی تنظیموں نے حفاظتی اقدامات کے بغیر آئل ٹینکرز کی امپورٹ کی اجازت پر احتجاج کرتے ہوئے وفاقی حکومت سے اپیل کی ہے کہ گڈانی پر کام کرنے والے محنت کشوں اور ماحولیاتی تحفظ کے لیے خود بلوچستان حکومت کے محکمہ تحفظ ماحولیات کی سفارشات پر عمل درآمد کو یقینی بنایا جائے اور حفاظتی اصولوں کے لیے عملی اقدامات کیے جانے تک پابندی برقرار رکھی جائے۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟