26 ستمبر 2018
تازہ ترین
بیرون ملک سے رقم کی واپسی، ٹاسک فورس قائم

وفاقی کابینہ نے بیرون ملک سے رقوم واپس لانے کا فیصلہ کرلیا، جس کے لیے ٹاسک فورس قائم کردی گئی۔ وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس وزیراعظم ہائوس میں ہوا، جس کے دوران 8 نکاتی ایجنڈا زیرِ غور آیا۔ اجلاس کے بعد پریس کانفرنس کرتے ہوئے وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات فواد چودھری نے بتایا کہ وفاقی کابینہ نے بیرون ملک سے رقوم واپس لانے کا فیصلہ کر لیا ہے اور اس حوالے سے ٹاسک فورس کے قیام کے لیے وزیراعظم ہائوس میں ایک یونٹ قائم کردیا گیا ہے۔ فواد چودھری نے بتایا کہ بیرون ملک ایک ارب روپے کی غیر قانونی جائیداد کی نشاندہی کرنے والے کو بیس کروڑ روپے دیئے جائیں گے۔ اس موقع پر مشیر بیرسٹر شہزاد اکبر نے کہا کہ بیرون ملک موجود رقم کی معلومات فراہم کرنے والے کا نام صیغہ راز میں رکھا جائے گا۔ تعلیم کے شعبے میں بہتری کے لیے بھی وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود کی سربراہی میں ایک ٹاسک فورس قائم کی گئی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ مدارس سمیت تمام سکولوں میں یکساں نصاب رائج کیا جائے گا اور نجی اسکولوں کی فیسوں کو بھی مناسب سطح پر لایا جائے گا۔  وفاقی کابینہ نے مدارس اور سکولوں میں یکساں نصاب تعلیم نافذ کرنے کی منظوری دے دی ،تعلیم کے شعبے میں بہتری کیلئے بھی شفقت محمود کی سربراہی میں ٹاسک فورس بنائی گئی ہے جس میں ماہرین کو شامل کیا جائے گا۔ یہ ٹاسک فورس مدارس کے بچوں کیلئے بھی اقدامات کرے گی، ملک بھر میں مدارس اور اسکولوں کے لیے یکساں بنیادی نصاب تعلیم کو نافذ کیا جائے گا۔ وزیراعظم نے سکولوں میں جسمانی سزائوں پر پابندی کی منظوری دے دی اور نجی سکولوں کی فیسوں کو مناسب سطح پر لایا جائے گا، بچوں کے بنیادی حقوق کیلئے بھی حکومت نے اقدامات کی منظوری دی ہے، زیادتی کے واقعات اور چائلڈ لیبر روکنے کے لیے اقدامات کئے جائیں گے، اسٹریٹس چائلڈز کیلئے ملک بھر میں یتیم خانے بنائے جائیں گے۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟