25 ستمبر 2018
تازہ ترین
بہتر ہوتا اپوزیشن ایک امیدوار پر متفق ہوتی، شہباز

 شہباز شریف  نے کہا ہے  کہ بہتر ہوتا  اپوزیشن ایک امیدوار پر متفق ہوتی، خلوص نیت سے اپوزیشن کو اکٹھا کرنے کی کوشش کی، پیپلزپارٹی بھی فضل الرحمان کے نام پر راضی ہو جاتی تو مقابلہ بہت اچھا ہوتا، پیپلزپارٹی نے اعتماد میں لئے بغیر اعتزاز احسن کا نام تجویز کیا۔  ممکنہ طور پر صدارتی انتخاب کیلئے الیکٹورل کالج سینیٹ، قومی اسمبلی، پنجاب، سندھ، پختونخوا اور بلوچستان اسمبلی 672 ارکان پر مشتمل ہوگا۔ اس الیکٹورل کالج میں قومی اسمبلی، سینیٹ اور بلوچستان اسمبلی کے ارکان کا ایک ایک ووٹ شمار ہوگا۔ چونکہ بلوچستان اسمبلی کے ارکان کی تعداد اس وقت سب سے کم 60 ہے تو دیگر تینوں اسمبلیوں کے ارکان کی تعداد بھی اسی لحاظ سے شمار کی جائے گی۔ پنجاب اسمبلی میں 5.9 ارکان کا ایک ووٹ ہوگا۔ سندھ اسمبلی کے 2.7 ارکان کا ایک ووٹ جبکہ پختونخوا اسمبلی کے 1.8 ارکان کا ایک ووٹ ہوگا۔ پنجاب اسمبلی میں کل 62 الیکٹورل ووٹوں کیلئے پولنگ ہوگی۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟