19 ستمبر 2018
بھارت سرحدی جارحیت کے ذریعے امن کوششوں کوسبوتاژکررہا ہے، پاکستان

واشنگٹن میں جلیل عباس جیلانی نے ویمن فارن پالیسی گروپ کو بریفنگ دی، جس میں انہوں نے پاک امریکا تعلقات اورجنوبی ایشیاء میں امن و استحکام پرروشنی بھی ڈالی۔بریفنگ کے دوران جلیل عباس جیلانی کا کہنا تھا کہ پاک امریکا تعلقات مشترکہ جمہوری مقاصد، باہمی احترام، امن کی بنیاد پرقائم ہیں، پاکستان پرامن ہمسائیگی کی پالیسی پر عمل پیرا ہے، بھارت مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں میں ملوث ہے جب کہ بھارت سرحدی جارحیت کے ذریعے پاکستان کی امن کوششوں کو سبوتاژ کررہا ہے، دو ایٹمی طاقتوں کے مابین تنازعات کے حل کا آپشن جنگ نہیں ہے جب کہ تعلقات نےمشکل وقت میں دونوں ممالک کومتحدرکھا۔پاکستانی سفیرجلیل نے مزید کہا پاکستانی معاشرہ جمہوریت، آزاد میڈیا اور عدلیہ کی جانب بڑھا ہے، مالیاتی اورکریڈٹ ریٹنگ ایجنسیزکا پاکستان کی معیشت سے متعلق مثبت رائےاسکی عکاس ہے، پاکستان میں خواتین کے حقوق کیلئے قانون سازی کی گئی ہے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان میں فوجی آپریشن کے بعد دہشتگردی کا تقریباً خاتمہ ہو چکا ہے، دہشتگردوں کاخاتمہ سیکیورٹی فورسزکی قربانیوں کانتیجہ ہے جس کے بعد امن و امان کی صورتحال میں بہتری سے معاشی سرگرمیوں میں تیز ی آ گئی ہے اور سیکیورٹی صورتحال کی بہتری کے باعث اقتصادی سرگرمیوں میں اضافہ ہوا ہے جب کہ دہشتگردوں کے خلاف کارروائی کسی تفریق کے بغیرکی جارہی ہے۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟