15 نومبر 2019
تازہ ترین
بجلی کے ذریعے تیزی سے زخم ٹھیک کرنے والی بینڈیج

بجلی کے ذریعے تیزی سے زخم ٹھیک کرنے والی بینڈیج

سائنٹیفک ریسرچ سے یہ بات ثابت ہوچکی ہے کہ دیرینہ زخم اور ناسور برقی سرگرمی سے جلدی ٹھیک ہوجاتے ہیں، اسی ریسرچ کو سامنے رکھ کر امریکی ماہرین نے ایک ہلکی پھلکی پٹی بنائی ہے جو چھوٹے چھوٹے برقی جھٹکوں سے زخم کو تیزی سے ٹھیک کر سکتی ہے۔ اس سے پہلے الیکٹرو تھراپی کی پٹیاں بہت بھاری بھرکم اور پیچیدہ ہوا کرتی تھیں۔ اسی لئے یونیورسٹی آف وسکانسن میڈیسن کے سائنس دانوں نے ایک ایسی برقی بینڈیج بنائی ہے جسے پہنتے وقت الجھن نہیں ہوتی۔ یہ با سہولت برقی ڈریسنگ مریض کے گھومنے پھرنے سے بجلی بناتی ہے۔ جدید ڈریسنگ میں بہت باریک نینو جنریٹرز لگائے گئے ہیں اور ان سے ایک تار نکل کر پہننے والے کے بدن تک جاکر وہاں ایک پیوند سے منسلک ہوتا ہے۔ جیسے جیسے مریض چلتا پھرتا ہے، نینو جنریٹرز میں بجلی بنتی ہے اور بجلی کی لہروں سے دیرینہ ناسور تیزی سے مندمل ہونا شروع ہوجاتا ہے۔ سانس لیتے ہوئے پسلیوں کے پھیلنے اور سکڑنے سے جو حرکت ہوتی ہے وہ نینو جنریٹر کیلئے بجلی کی تیاری میں بہت ہوتی ہے۔ اس لئے پٹی کیلئے کسی بیٹری کی ضرورت نہیں ہوتی۔ پٹی پر لگے برقیروں سے ہلکی بجلی زخم تک جاتی ہے اور کٹے پھٹے زخم کو تیزی سے مندمل کرتی ہے۔ تجربہ گاہ میں چوہوں پر کئے گئے تجربات سے ثابت ہوا کہ جو زخم عام حالات میں 12 روز میں درست ہوتے ہیں الیکٹریکل پٹی نے اسے تین دن میں ٹھیک کردیا۔


مزید خبریں

عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟