21 نومبر 2018
تازہ ترین
ایل پی جی کی قیمت میں 5روپے اضافہ

چیئرمین ایل پی جی ڈسٹری بیوٹرز ایسوسی ایشن پاکستان چیئرمین و فائونڈر ایل پی جی انڈسٹریز ایسوسی ایشن آف پاکستان عرفان کھوکھر نے کہا کہ ایل پی جی کی قیمت میں مزید 5 روپے فی کلو، 60 روپے گھریلو سلنڈر، 120 روپے کمرشل سلنڈر کا بلا جواز اضافہ کیا گیا، لوکل ایل پی جی پروڈیوسر گیس مافیا نے قیمت میں چوتھی بار اضافہ کر کے لاکھوں غریب رکشہ ڈرائیوروں کے چولہے ٹھنڈے کر دیئے۔ درآمد نہ ہونے کے برابر، 95فیصد لوکل ایل پی جی کو بین الاقوامی قیمت سے بھی زیادہ قیمت پر فروخت کیا جا رہا ہے، ملک بھر میں ایل پی جی قیمتوں میں اوگرا نوٹیفیکیشن کے بغیر ہی چوتھی بار اضافہ کیا گیا ، جبکہ مزید قیمتیں بڑھنے کا اندیشہ ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ ایل پی جی لوکل پروڈیوسر مافیا نے بلیک مارکیٹنگ کا نیا ریکارڈ قائم کر دیا اور قیمت ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح عبور کر چکی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کے ایل پی جی پالیسی 2016 میں895 روپے گھریلو سلنڈر اور 75روپے فی کلو ایل پی جی کی جگہ200روپے فی کلو سے تجاوز کر گئی ۔ انہوں نے ایل پی جی پالیسی 2016کے مطابق ایل پی جی پروڈیوسر کی قیمت 30000فی میٹرک ٹن مقرر کرنے کا مطالبہ کیا ۔ 14جون 2018 سے جے جے وی ایل جے جے وی ایل ایل پی جی پیداواری پلانٹ کی بندش سے ایل پی جی انڈسٹری میں بہت بڑا خلا پیدا ہو گیا ،جس سے تقریباً 13000 میٹرک ٹن فی ماہ کمی واقع ہوئی ، جس کی وجہ سے ایل پی جی انڈسٹری کو 26000 میٹرک ٹن کی کمی کا سامنا اور ایس ایس جی سی اور حکومت کو 2ماہ میں ٹوٹل 2ارب 43 کڑوڑ اور ٹیکس کی مد میں 472 ملین کا نقصان ہوا ہے۔ کسی بھی قیمت پر پلانٹ چالو کر کے سپلائی بحال کی جائے۔ انہوں نے کہا کہ قیمتیں بڑھنے سے غریب عوام پر بوجھ بڑھ گیا۔ لوکل ایل پی جی پیداوار کو تمام ایل پی جی مارکیٹنگ کمپنیوں میں میرٹ کی بنیاد پر تقسیم کیا جائے اور شرط عائد کی جائے کہ اس میں 50 فیصد امپورٹ کو شامل کر کے صارفین کیلئے ایک قیمت مقرر کی جائے تو قیمت میں 30فیصد کمی آسکتی ہے۔ انہوں نے کہاہے کہ 30 اگست 2018 کو لاہور میں بہت بڑا مظاہرہ کیا جائے گا۔ اگر ایل پی جی کی قیمتوں کو قابو نہ کیا گیا تو 5 ستمبر 2018 کو خیبر سے کراچی تک شٹر ڈاؤن اور پہیہ جام ہڑتال ہوگی۔ ہم غریب عوام کو ریلیف دینے کیلئے حکومت کے ساتھ کھڑے ہیں۔ ایل پی جی ڈسٹری بیوٹرز ایسوسی ایشن پاکستان کا وزیر اعظم پاکستان اور وزیر پٹرولیم سے اس سنگین معاملے پر اس خود نوٹس لینے کا مطالبہ کرتی ہے۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟