26 ستمبر 2018
تازہ ترین
ایران اور دبئی نے پاکستانی چاول کی خریداری بند کر دی

ایران اور دبئی نے پاکستان سے چاول کی خریداری روک دی جس سے چاول کی برآمدات میں مسلسل کمی کا رجحان ہے ، رواں مالی سال کی پہلی سہ ماہی میں چاول کی ایکسپورٹ 16 کروڑ ڈالر کم ہوئی جو گزشتہ مالی سال کے اسی عرصے سے 20 فیصد تک کم ہے ، علاوہ ازیں چاول کے زیر کاشت رقبے میں بھی نمایاں کمی آ رہی ہے۔ سال 2015 ئ  کے دوران پنجاب میں 18لاکھ 77 ہزار ہیکٹر رقبے پر چاول کاشت کیا گیا جو پچھلے سال کم ہو کر 17 لاکھ 89 ہزار ہیکٹر رہ گیا تھا جبکہ رواں برس 18 لاکھ ایکڑ رقبے پر چاول کاشت کرنے کا ہدف مقرر کیا گیا لیکن تمام تر کوششوں کے باوجود 17 لاکھ ہیکٹر رقبے پر چاول کی کاشت ممکن ہوئی ہے جو مقررہ ہدف سے پانچ فیصد تک کم ہے۔ سٹیٹ بینک کی تازہ ترین رپورٹ کے مطابق چاول کی پیداوار مالی سال 2016õ17ئ  کے ہدف اور گزشتہ برس کی سطح دونوں کے کم رہنے کا امکان ہے ، جبکہ اس کمی کا مرکز پنجاب ہے جہاں باسمتی چاول سب سے زیادہ پیدا ہوتا ہے۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟